"سینٹورس ٹاورز" اسلام آباد کی نئی پہچان

ابو طلحہ السلفی نے 'دیس پردیس' میں ‏دسمبر 3, 2010 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابو طلحہ السلفی

    ابو طلحہ السلفی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏اگست 13, 2009
    پیغامات:
    555
    [​IMG]
    [​IMG]
    یہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے ایف ایٹ (F-8) سیکٹر (بلیوایریا) میں زیر تعمیر "سینٹورس ٹاورز" کی تصاویر ہیں جو عنقریب اسلام آباد کی ایک نئی پہچان بننے والے ہیں۔ 6.59 ایکڑ پر محیط 37 منزلہ ان ٹاورز پر خرچے کا تخمینہ 350 ملین ڈالرز (یعنی 3500 لاکھ ڈالرز) لگایا گیا ہے۔ سینٹورس ٹاورز کی چند نمایاں خصوصیات کچھ یوں ہیں:
    > اس میں اکیس (21) منزلہ دو ٹاورز پر مشتمل پاکستان کا پہلا اور دنیا کا تیسرا سیون سٹار ہوٹل ہو گا۔
    > پچس (25) منزلہ کارپوریٹ آفس ٹاور
    > تین لاکھ سکوئر فیٹ پر مشتمل پانچ منزلہ شاپنگ مال جس میں ایک وسیع و عریض فوڈ سٹریٹ بھی ہو گی
    > کار پارکنگ جس میں دو ہزار گاڑیوں کے پارکنگ کی گنجائش ہو گی
    > نو اعشاریہ پانچ شدت تک کے زلزے کو برداشت کرنے کی صلاحیت ہو گی
    > جس جگہ سینٹورس ٹاورز کی تعمیر جاری ہے وہ پاکستان کی تاریخ کی سب مہنگی ترین جگہ ہے۔
    > فیصل مسجد کی طرح یہ ٹاورز بھی تقریباً پورے اسلام آباد سے دیکھے جا سکتے ہیں۔
    اس تاریخی منصوبے کی تکمیل ۲۰۱۲ تک متوقع ہے۔ تجارتی ، اقتصادی اور رہائشی مقاصد کیساتھ ساتھ ان ٹاورز میں واقع سیون سٹار ہوٹل میں مخلتف عالمی کانفرنسوں اور سیمینارز وغیرہ کا بھی انعقاد کیا جائے گا۔
    بشکریہ:
    The Centaurus - The Identity of Pakistan |ABOUT US|
     
  2. عاصم خان

    عاصم خان -: مشاق :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 3, 2010
    پیغامات:
    396
    ماشاءاللہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔
     
  3. abrarhussain_73

    abrarhussain_73 --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏اپریل 6, 2009
    پیغامات:
    371
    ماشاءاللہ۔ تصویر دیکھ کر یوں لگتا ہے جیسے اللہ لکھا ہوا ہے آپ کیا کہتے ہیں۔
     
  4. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,903
    لا ۔ اللہ کے نام کا آخری حرف ''ہ'' ہے جو کہ اس تصویر میں نظر نہیں آ رھا ۔
     
  5. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,757
    ماشاءاللہ کافی خوبصورت ڈیزائن ہے بلڈنگ کا
     
  6. irum

    irum -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,580
    شیئرنگ کا شکریہ بھائی
     
  7. کفایت اللہ

    کفایت اللہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏اگست 23, 2008
    پیغامات:
    2,017
    آج کل لوگوں کو گاجرمولی میں بھی اللہ نظر آتاہےیہ توخیرعمارت ہے۔
     
  8. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,903
    ابتسامہ ۔ جب کہ اللہ کو گاجر مولی اور عمارتوں ، بادلوں ، درختوں پہاڑوں پر تلاش کرنا اور دیکھنا ضروری نہیں‌۔ ضروری چیز اللہ اور اس کے رسول کی اطاعت ہے جو کہ ہم کرتے نہیں‌ ۔
     
  9. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    جزاكم اللہ خيرا۔ اس عمارت كى تفصيلات ميں كسى مسجد كا ذكر آپ كو نہیں ملے گا۔
    http://www.thecentaurus.com/the_centaurus_residencia_sal_feat.asp
    والى اللہ المشتكى ۔
     
  10. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,757
    :00001::00001::00001::00001::00001::00001:
     
  11. ابودجانہ

    ابودجانہ --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏دسمبر 9, 2010
    پیغامات:
    763
    بالکل آپ نے صیحیح کہا ہے کہ مسجد کا ذکر بھی نہیں ہے
     
  12. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,850
    السلام علیکم!

    ہر بڑے ہوٹلز میں نماز پڑھنے کے لئے کچھ حصہ وقف ہوتا ھے جسے اردو میں مسجد اور انگلش میں Prayer Room کہتے ہیں۔ یہاں پر عملہ بھی نماز پڑھتا ھے جماعت کے ساتھ یا ڈیوٹی وقت کے مطابق سنگل اور یہ کسٹمرز کی بھی ڈیمانڈ ھے۔


    والسلام
     
  13. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    اکیس منزلہ دو ٹاورز پر مشتمل دنيا كے تيسرے اور پاكستان کے پہلے سیون سٹار ہوٹل کے "ايك مال" ميں ايك "پرئیر روم" واہ سبحان اللہ !
    نماز پڑھنے والے ويسے بھی اقليت ہیں وہ اتنے پہ ہی خوش ہیں ۔ مسجد كا مطالبہ كون كرے گا ؟ احساس زياں كسے ہے؟الذين إن مكنهم في الأرض أقاموا الصلاة وآتوا الزكاة۔۔۔ والے خصائل ركھنے والے تو زمانہ ہوا تاريخ كا حصہ بن چکے ۔۔۔ ! وااسلاماہ !
    يقينا پرئیر روم نماز كے یے ہوتا ہے مگر پرئيرروم كے ليے موذن ركھنا پڑتا ہے نہ امام ، اقامت ہوتى ہے نہ اذان اور جمعہ نہ عيدين مسلمانوں كا كوئى ايسا اجتماع نہیں ہوتا جس سے ان كى قوت وشوكت اور تعداد كا كمزور وعياش مادہ پرست دلوں پر رعب پڑے ۔۔۔۔
    اميد ہے فرق نظر آگيا ہو گا ۔۔؟
    يا اللہ تو ہمیں سيون سٹار ہوٹل دےنہ دے، ہميں وہ غيور چرواہے دے دے جو پہاڑوں ميں اكيلے بكرياں چراتے ہوں وقت نماز آئے تو اكيلے ہی اذان كہیں اور قبلہ رو ہو كر تيرى عبادت كريں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  14. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,850
    السلام علیکم!

    چلیں یہ تو سرچ ہو گیا کہ یہ 7 سٹار ہوٹل ھے، مگر یہ نہیں معلوم کہ سٹارز ہوٹلز کیا ہوتا ھے اور اس کی اپنی حیثیت/ اہمیت کیا ہوتی ھے جس میں سپیشل مسجد تلاش کی جا رہی ھے۔

    مسلمان کو نماز پڑھنے کے لئے جہاں صاف جگہ میں مصلہ بچاؤ نماز پڑھی جا سکتی ھے، اس کے لئے سٹاف اور کسٹمرز کے لئے Prayer Room کی سہولت کا موجود ہونا اچھی علامت ہوتا ھے۔ ایسے بڑے سٹارز ہوٹلز میں ٹرانسپورٹ کی سہولت بھی ہوتی ھے اگر کوئی مسجد میں نماز پڑھنا چاہے یا جمعہ اسے وہاں تک پہنچانے اور لانے کی ڈیوٹی بھی انہی کی ہوتی ھے۔

    اللہ سبحان تعالی نے 7 سٹار ہوٹل آپ کو نہیں دیا اگر آپ وہاں پر کوئی دینی پروگرام کروانا چاہیں تو آپکو جگہ کے لئے کرایہ دینا پڑے گا۔ ہاں یہ دعا ضرور کی جا سکتی ھے کہ اللہ سبحان تعالی آپ کو بھی اتنا دے کہ آپ مسجدیں بنائیں۔

    والسلام
     
  15. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,636
    ایک چیز جو یہاں کویت میں میں نے دیکھی ہے کہ تقریباً ہر بڑے مال یا شاپنگ سنٹر میں Prayer Room الگ ہوتا ہے، جس کے باہر عربی میں "مسجد" نہیں لکھا ہوتا، بلکہ "مصلیٰ " لکھا ہوتا ہے۔ اور شاپنگ سنٹر کے باہر ایک بڑی مسجد جسمیں باقاعدہ امام، مؤذن ہوتا ہے۔ جمعہ کا خطبہ بھی ہوتا ہے۔ اور اسکی طرف جانے والے سب راستوں پر عربی میں "مسجد" لکھا ہوتا ہے اور انگلش میں "Mosque " لکھا ہوتا ہے۔

    اگر centaurus towers کے باہر بھی باقاعدہ ایک بڑی مسجد بنا دی جائے جو کہ اسی پراجیکٹ کا حصہ ہو تو کیا ہی بات ہے۔ تصاویر دیکھ کر تو نہیں لگتا کہ باقاعدہ مسجد اس پراجیکٹ کا حصہ ہے۔
    جہاں یہ لوگ کتنے ارب اس شاپنگ سنٹر پر لگا رہے ہیں ، کیا وہاں ایک کروڑ مسجد پر نہیں لگا سکتے؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  16. کفایت اللہ

    کفایت اللہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏اگست 23, 2008
    پیغامات:
    2,017
    جزاک اللہ خیرا جاسم بھائی ۔
     
  17. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    جى بالكل پرئير روم اور مسجد ميں واضح فرق ہے ليكن انگريزوں سے مرعوب دماغ اس كو نہيں سمجھ سكتے۔

    يہ منصوبہ شوكت عزيز جيسوں کے عہد ميں شروع ہوا تھا، انہیں مسجد كى عظمت اور اہميت كى كيا خبر؟ ان كا بس چلتا تو اسلام آباد كے نام سے اسلام بھی نكال كر جاتے۔
    يہاں ايك فائيوسٹار ہوٹل ايسا ہے جس ميں نہ مسجد ہے نہ قريبى مسجد كى اذان كى آواز سنائى ديتى ہے نہ نمازيوں كو فيسى لٹيٹ كيا جاتا ہے۔ لوبى ميں گیٹ کیپرز نے پلاسٹك كى چٹائياں رکھی ہیں كيونكہ وہ غريب نماز پڑھتے ہیں، بس ان كے ساتھ نماز پڑھی جا سكتى ہے۔
     
  18. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    5,050
    میں نے پاکستان میں‌کوئی بھی اعلی ہوٹل ایسا نہیں‌دیکھا جس میں‌باقاعدہ مسجد ہو۔ زیادہ سے زیادہ یہی کہ ایک کمرہ مختص کر دیا نماز کے لیے۔ ورنہ وہ بھی نہیں۔
     
  19. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    جتنے نمازى ہوں گے اتنى ہی سہوليات مليں گی نا؟ كاروبارى لوگ كسٹمر كى خوشنودى كى خاطر كچھ بھی كر ليتے ہیں۔ کسٹمر مسجد مانگے گا تو وہ بنا ديں گے۔اصل مسئلہ ہمارا ہے ، مسلمان علاقوں كے تفريحى مقامات پر بھی كوئى مسجد بمشكل تلاش پر ملتى ہے۔
     
  20. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,903
    السلام علیکم ورحمتہ اللہ ۔
    ویسے مکہ اور مدینہ میں‌تقریبا عمارتوں میں مساجد ہوتی ہے ۔ اور باقاعدہ امام بھی مقرر ہوتا ہے ۔ مسجدالحرام کے ساتھ ہلٹن میں بہت بڑی مسجد ہے ۔ حالانکہ حرم ساتھ ہونے کی وجہ سے اس کی‌ضرورت نہیں تھی لیکن پھر بھی مسجد موجود ہے ۔ ابھی حال ہی میں تیار ہونے والی وقف الملک عبدالعزیز رحمہ اللہ میں بہت بڑی مسجد ہے ، حالانکہ اس میں بھی ضرورت نہیں تھی کیونکہ حرم کے ساتھ ہے ۔ان مساجد کا فائدہ یہ ہے کہ حج اور رمضان کریم میں رش کے موقع پر لوگ ان مساجد میں نماز پڑھتے ہیں ۔ یہاں ہوٹلز میں اکثر مساجد ہوتی ہیں - دوسرے شہروں کا معلوم نہیں‌۔ ملتان کے ایک دو ہوٹلز میں مساجد دیکھی تھیں ۔ معلوم نہیں کہ اب ہیں بھی یا نہیں‌۔
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں