رمضان کی شرافت

s4shakeel نے 'طنزیہ و مزاحیہ نثری تحریریں' میں ‏ستمبر 23, 2007 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. s4shakeel

    s4shakeel -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    2,196
    رمضان کی شرافت

    رمضان کے شروع ہونے سے پہلے، جس طرح ہمارے گلی گلی بے تحاشا “شامیانے“ لگتے اور ہوٹل ہوٹل بے پناہ “شادیانے“ (میوزیکل پروگرام) بجتے ہیں۔ جس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہیکہ ہم لوگ اپنی خوشیوں کی منصوبہ بندی کرنے میں کتنے ایڈوانس واقع ہوئے ہیں۔ اس مہینے کی آمد سے پہلے ہم اپنی شادیاں اور موسیقیاں دھڑا دھڑ کچھ اس طرح بھگتا رہے ہوتے ہیں، جیسے جنگ یا ہڑتال کی خبر سن کر گھر میں ایڈوانس راشن ڈال دیا جاتا ہے۔ رمضان کے مہینے میں جہاں قوال اور نعت خواں خوش نظر آتے ہیں، وہاں خاص گلوکار اور عام سازندے سرعام اداس پھر رہے ہوتے ہیں کہ صرف اس مہینے میں موسیقی عملی طور پر حرام سمجھی جاتی ہے۔ بقول سرگم انسانوں اور دفتروں کی طرح مہینوں میں یہ ایک شریف مہینہ ہوتا ہے، جسے ہم رمضان شریف کہتے ہیں۔
    انسانی شرافت کی طرح رمضانی شرافت کا بھی ہمارے ہاں ناجائز فائدہ اٹھایا جاتا ہے۔ رمضان شریف کی عقیدت کی آڑ میں دفتروں، سرکاری اداروں اور بینکوں کے ملازم روزے دار آدھا دن کام کر کے پورے دن کی تنخواہ وصول کرنا اپنا مذہبی فریضہ سمجھ کر اسے بڑی ایمانداری سے پورا کرتے ہیں۔ دکاندار بھی رمضان شریف کو نہایت مقدس اور مبارک سمجھتے ہوئے 30 دن جھوٹ بولنے سے “عارضی توبہ“ کرتے ہیں اور وہ اس طرح کہ اشیاء فروخت کی قیمتیں منہ سے بتانے کے بجائے ان پر پرائس ٹیگ لگا دیتے ہین، تاکہ اس مبارک مہینے میں انہیں جھوٹ بولنا نہ پڑے۔
    بونگے کا کہنا ہیکہ زندگی ایک سفر ہے اور سفر میں روزہ معاف ہے، اس لئے امیر آدمی کی یہی کوشش ہوتی ہیکہ وہ زیادہ تر ہوائی سفر میں ہی رہے۔ رمضان شریف کے سوا عام دنوں میں ہوائی جہاز کے چالاک اور تجربہ کار مسافر ہمیشہ اگلی سیٹوں پر بیٹھتے ہیں، جبکہ رمضان شریف میں وہ ہمیشہ جہاز کی پچھلی سیٹ پر بیٹھنے کو ترجیح دیتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ اگر آپ پہلی سیٹ پر بیٹھے ہوں اور ایئر ہوسٹس کھانے پینے کے لئے کچھ لائے تو آپ “سرموشرمی“ کہہ دیتے ہیں کہ میں‌روزے سے ہوں۔ پھر جب آپ پیچھے مڑ کر دیکھیں کہ آپ کے سوا سبھی کھا پی رہے ہیں، تو آپ کو اپنی جلد بازی پر پورا سفر افسوس لگا رہتا ہے۔ ملک میں رمضان شریف کی شرافت سے ناجائز فائدہ اٹھانے والوں کو دیکھتے ہوئے انکل سرگم کا کہنا ہیکہ رمضان میں شیطان قید ہو جاتا ہے اور آج کل کا انسان ضمانت پر رہا ہو جاتا ہے۔​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. irum

    irum -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,578
    بہت خوب
     
  3. ابن عمر

    ابن عمر رحمہ اللہ بانی اردو مجلس فورم

    شمولیت:
    ‏نومبر 16, 2006
    پیغامات:
    13,354
  4. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    [​IMG]
     
  5. نعمان نیر کلاچوی

    نعمان نیر کلاچوی ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 25, 2011
    پیغامات:
    552
    بہت خوب
     
  6. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    بہت خوب برادر
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں