سلیم ناز بریلوی کے ترانے

عائشہ نے 'کلامِ سُخن وَر' میں ‏فروری 9, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496

    http://youtu.be/lwAQoRQukQk
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟
    ظلم اور جبر كى يہ سيہ رات ہے
    آگ اور خون كى تيز برسات ہے
    جشن برپا ہے لاشوں كى بارات ہے
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟
    جنگ برپا ہے آگے بڑھا دے مجھے
    مسكرا كر ذرا حوصلہ دے مجھے
    دين پر مر مٹوں يہ دعا دے مجھے !
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟
    توڑ دينا مرا ہر كھلونا اے ماں
    آنسوؤں سے نہ دامن بھگونا اے ماں
    ديكھ كر لاش ميرى نہ رونا اے ماں
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟
    تيرى مٹی پہ تارے سجا دوں گا ميں
    سارى وادى گلوں سے سجا دوں گا ميں
    قطرہ ء خوں كو شبنم بنا دوں گا ميں

    مسجد بابرى ہم كو تيرى قسم
    جب تك سانس ميں سانس ہے دم ميں دم
    آنچ آنے نہ ديں گے كبھی تجھ پہ ہم
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟

    بيج آزاديوں کے بكھيرے چلو
    بھارتى فوج كو مل كے گھیرے چلو
    بچ کے جانے نہ پائيں لٹيرے چلو
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟

    اپنے خوں سے نكھاروں ترا بانکپن
    ذكر كيا تيرے پھولوں كا ميرے چمن
    تيرے كانٹوں پہ بھی وار دوں جان وتن
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟

    شاخ بھى ميرے ہاتھوں ميں شمشير ہو
    ميرے خوابوں كى بھرپور تعبير ہو
    اے خدا جلد آزاد كشمير ہو !
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟

    باندھ اب ميرے سر پہ اے مادر كفن
    زخم كھانے كو بےچین ہے یہ بدن
    آ رہا ہوں ميں اے ميرے پيارے وطن
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟

    ايك بوسہ تو دے ميرى گردن كو ماں
    تا كہ مقتل ميں مشكل نہ ہو امتحاں
    لا الہ آخرى دم ہو ورد زباں
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟

    آندھیوں سے لڑا اپنے شہباز كو
    سر پہ رکھ ہاتھ پھر بھیج پرواز كو
    اور دعائيں شہادت كى دے نازؔ كو
    پيارى ماں مجھ كو تيرى دعا چاہیے
    جب شہادت ملے مجھ كو كشمير ميں اور كيا چاہیے ؟



     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    اندھیری شب ہے روشن چاند تارو جاگتے رہنا

    ايك اور ربط
    http://youtu.be/qUSW9uak1bs

    تشدد كا يہ ايك سيلاب تو بس كچھ دنوں تك ہے
    اے صبر و ہمت كے كنارو جاگتے رہنا !
     
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    کشمیر کا ذرہ ذرہ ہے اسلام ترے متوالوں کا
    اب دنیا لوہا مان رہی ہے وادی کے رکھوالوں کا


    سليم ناز كا ايك اور عمدہ ترانہ
    http://youtu.be/SbazVHGzVLQ
     
  4. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    اگر چہ کاشمیر میں ستم کی گھور رات ہے
    نہ غم کرو مجاہدو خدا تمہارے ساتھ ہے

    ميں ہوں شہيد ميرے ساتھ سارى كائنات ہے

    مرے خدا زميں پہ جا بجا مرا ہی خون ہے
    مگر مجھے نہ خوف و ڈر نہ غم نہ کچھ جنون ہے
    مجھے تو اپنی قبر ميں سكون ہی سكون ہے
    مرى لحد ميں حور و رنگ نور كى بارات ہے

    ميں ہوں شہيد ميرے ساتھ سارى كائنات ہے
    اگر چہ کاشمیر میں ستم کی گھور رات ہے
    نہ غم کرو مجاہدو خدا تمہارے ساتھ ہے

    سبھی کے انتظار ميں ہے یوں بھی دوستو اجل
    ہے موت كى پكار تو سبھی کے واسطے اٹل
    رہِ خدا ميں جان دو يہی ہے مسئلے كا حل
    کبھی فنا نہيں جسے وہ بس خدا كى ذات ہے !

    ميں ہوں شہيد ميرے ساتھ سارى كائنات ہے
    اگر چہ کاشمیر میں ستم کی گھور رات ہے
    نہ غم کرو مجاہدو خدا تمہارے ساتھ ہے

    اے غازيو بڑھے چلو شہادتوں كى راہ ميں
    رہے جو منزل رضائے رب اگر نگاہ ميں
    بلند مرتبہ ملے گا اس كى بارگاہ ميں
    شہيد كى جو موت ہے وہ قوم كى حيات ہے

    ميں ہوں شہيد ميرے ساتھ سارى كائنات ہے
    اگر چہ کاشمیر میں ستم کی گھور رات ہے
    نہ غم کرو مجاہدو خدا تمہارے ساتھ ہے

    تم ہندؤوں کے مورچے پھلانگتے بڑھے چلو
    دعائے فتح اپنے رب سے مانگتے بڑھے چلو
    چمن ميں تم سروں کے پھول ٹانکتے بڑھے چلو
    مجاہدو تمہارے سر پہ تو خدا كا ہاتھ ہے

    ميں ہوں شہيد ميرے ساتھ سارى كائنات ہے
    اگر چہ کاشمیر میں ستم کی گھور رات ہے
    نہ غم کرو مجاہدو خدا تمہارے ساتھ ہے

    اے نازؔ كاشمير ميں بپا ہے آج كربلا
    کہ ماؤں بہنوں بيٹيوں كا زير تيغ ہے گلا
    دے اپنی بوند بوند سے مجاہدوں كو حوصلہ
    اے ميرى جھيل ڈل کہ اب تو ڈل نہيں فرات ہے

    ميں ہوں شہيد ميرے ساتھ سارى كائنات ہے
    اگر چہ کاشمیر میں ستم کی گھور رات ہے
    نہ غم کرو مجاہدو خدا تمہارے ساتھ ہے

    http://youtu.be/B6FROEJMR9w
     
  5. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
  6. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,637
    جزاک اللہ خیرا سسٹر۔ بہت عمدہ ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. sfaseehrabbani

    sfaseehrabbani معروف اردو شاعر

    شمولیت:
    ‏نومبر 17, 2010
    پیغامات:
    267
    بہت شکریہ اس عمدہ شئیرنگ کے لیے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  8. Ishauq

    Ishauq -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,613
    واقعی احسن عزیز کی شہادت نے سلیم ناز بریلوی مرحوم کی یاد بھی تازہ کر دی ھے
     
  9. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    آج سحر کے بعد غزہ کی خون چکاں خبریں سنتے ہوئے سلیم ناز بریلوی مرحوم کا ایک ترانہ یاد آ رہا تھا جو بچپن میں ہم لوگ زیرلب گنگنایا کرتے تھے، آج مجلس کے لیے لکھ ڈالا اور دل سے دعا نکلتی رہی کہ ایک دن ہم اسرائیل کے قصہ پارینہ ہو جانے کی خبر بھی سنیں۔

    خون شہیداں رنگ لایا

    فتح کا پرچم لہرایا

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    روسی ساز اور گیت گئے

    ہجرت کے دن بیت گئے

    دین کے خادم جیت گئے

    جدوجہد میں عزت ہے

    ہجرت اپنی غیرت ہے

    آرزو اپنی شہادت ہے

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    ذرہ ذرہ دمک اٹھا

    حق کا ستارہ چمک اٹھا

    گلشن افغاں مہک اٹھا

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    روس نے بازی ہاری ہے

    ہند پہ لرزہ طاری ہے

    اب کشمیر کی باری ہے

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    روس کے چھکے چھوٹ گئے

    ظلم کے بندھن ٹوٹ گئے

    سرخ غبارے پھوٹ گئے

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    جاگ اٹھو اہل کشمیر

    ہاتھوں میں لے کر شمشیر

    بدلو جموں کی تقدیر

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    مسجد اقصی روتی ہے

    کیوں یہ تباہی ہوتی ہے

    امت مسلم سوتی ہے

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    علمِ یہود اکھاڑیں گے

    کفر کے پردے پھاڑیں گے

    دین کے جھنڈے گاڑیں گے

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    شکریہ اہلِ اخوت کا

    دل سے قبولئ ہجرت کا

    پاکستان کی ملت کا

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    خون شہیداں رنگ لایا

    فتح کا پرچم لہرایا

    جاگو جاگو صبح ہوئی

    عجیب بات ہے اس ترانے کا ایک شعر بہت سے لوگ مایوسی پھیلانے کے لیے یوں دہراتے ہیں : "مسجد اقصی روتی ہے ، امت مسلم سوتی ہے " لیکن ہمیں جذبے بھرے یہ مثبت بول یاد نہیں :
    علمِ یہود اکھاڑیں گے

    کفر کے پردے پھاڑیں گے

    دین کے جھنڈے گاڑیں گے
    سلیم ناز مرحوم اتنے مثبت اور متحرک انسان تھے لیکن کچھ پست ہمت لوگوں نے ان کے اشعار سے بھی ماتم ہی کشید کیا۔ مکمل ترانہ دیکھنے پر معلوم ہوتا ہے کہ امت کے درد کے ساتھ ، اس کی تاریخ پر گہری نظر اور مستقبل کے لیے مثبت سوچ کتنی ضروری ہے ، تبھی انسان اپنے ورثے پر فخر کرتا ہے اور اگلی نسلوں تک یہ امانت پہنچاتا ہے ۔ بحیثیت مسلمان میں سلیم ناز کی ہمیشہ قدر کرتی رہوں گی جنہوں نے بچپن میں ہی مجھے یہ سکھایا کہ
    جدوجہد میں عزت ہے

    ہجرت اپنی غیرت ہے

    آرزو اپنی شہادت ہے
    غزہ کا ہر مسلمان ، فلسطین کا ہرفرد ، اس فلسفے کی عملی مثال ہے ۔
    بے شک سادہ لفظوں ، مختصر مصرعوں اور کانوں میں رس گھولنے والے لحن کے ساتھ ساتھ سلیم ناز مرحوم ایک پختہ نظریاتی شاعر تھے ۔ اللہ تعالی ہر مسلم حریت پسند کو دنیا و آخرت میں بہترین زندگی دے اور ہماری امت میں سر اٹھا کر جینے والوں کی تعداد میں اضافہ کریں تاکہ ہم جلد وہ دن دیکھیں جب کسی مشکل میں ایک دوسرے پر الزام رکھنے کی بجائے ہم سب ایک ایسی ملت بن کر ابھریں جس کا ہر فرد ایک چٹان ہو ، جس کی صفیں باطل کی راہ میں مضبوط بند ثابت ہوں اور اس سے ٹکرانے والا پاش پاش ہو جائے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 5
  10. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    4,978
    میرے بچپن میں بھی یہ ترانہ مساجد میں پڑھا جاتا تھا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  11. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,920
    جزاک اللہ خیرا۔ آمین۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  12. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    وایاک
     
  13. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    سینے پر گولی کھائیں گے سر کو نہیں جھکائیں گے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  14. عطاءالرحمن منگلوری

    عطاءالرحمن منگلوری -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 9, 2012
    پیغامات:
    1,470
    جزاک اللہ خیرا۔ سلیم ناز برءلوی کے ترانوں کے متعلق کسی نے بتایا تھا کہ انڈین آرمی کہتی ہے یہ ترانے تو مردے سن لیں تو قبروں سے نکل آئیں۔
    مرحوم سے ملنے اور ترانے سننے کا شرف بارہا حاصل ہوا۔ آج بھی وہ ولولہ اور پراثر آواز کانوں میں گونجتی ہوئ محسوس ہوتی ہے۔
    اللھم اغفرہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • متفق متفق x 1
  15. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    وایاک کوئی شک نہیں۔ دل سے لکھا دل پہ اثر کرتا ہے۔ سلیم ناز مذہبی لوگوں میں پیدا ہوئے تھے اسی لیے ناقدری ہوئی۔ مذہبی لوگ اپنے ہیروں جیسے لوگوں کا کام صرف اس لیے ضائع کر دیتے ہیں کہ نظریات میں 19 ، 20 کا فرق تھا۔ فن، ثقافت، شعروادب کا ایک وسیع ورثہ اسی ناقدری کی نذر ہوا۔ کیا حرج ہے اگر ہم اہل قلم کا کام اور اس پر ہونے والی تنقید دونوں ایمان داری سے محفوظ کر کے اگلی نسلوں تک پہنچا دیا کریں؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں