کیا رسول اللہ کے والدین اسلام لاچکے تھے ؟

ابوعکاشہ نے 'اتباعِ قرآن و سنت' میں ‏جون 23, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,867
    [QH]الحمدلله رب العالمين والصلاة والسلام على أشرف الأنبياء والمرسلين أما بعد:[/QH]

    جو کہتا ہے کہ وہ مرنے کے بعد مسلمان ہو چکے تھے تو اس کا قول شریعت کے خلاف ہے ـ اور اسی طرح جو یہ کہتا ہے انبیاء علیہ السلام کے والدین سب مؤمن ہیں ، کیونکہ حدیث میں ثابت ہے کہ
    [QH]أَنَّ رَجُلًا قَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ أَيْنَ أَبِي قَالَ فِي النَّارِ فَلَمَّا قَفَّى دَعَاهُ فَقَالَ إِنَّ أَبِي وَأَبَاكَ فِي النَّارِ [/QH]
    ''آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک شخص کو فرمایا ، میرا باپ اور تمہارا باپ جہنم میں ہیں ـ ''

    اسی طرح سعید بن المسیب اپنےوالد سے روایت کرتے ہیں کہ :

    [QH]لَمَّا حَضَرَتْ أَبَا طَالِبٍ الْوَفَاةُ جَاءَهُ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَوَجَدَ عِنْدَهُ أَبَا جَهْلِ بْنَ هِشَامٍ وَعَبْدَ اللَّهِ بْنَ أَبِي أُمَيَّةَ بْنِ الْمُغِيرَةِ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لِأَبِي طَالِبٍ يَا عَمِّ قُلْ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ كَلِمَةً أَشْهَدُ لَكَ بِهَا عِنْدَ اللَّهِ فَقَالَ أَبُو جَهْلٍ وَعَبْدُ اللَّهِ بْنُ أَبِي أُمَيَّةَ يَا أَبَا طَالِبٍ أَتَرْغَبُ عَنْ مِلَّةِ عَبْدِ الْمُطَّلِبِ فَلَمْ يَزَلْ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَعْرِضُهَا عَلَيْهِ وَيَعُودَانِ بِتِلْكَ الْمَقَالَةِ حَتَّى قَالَ أَبُو طَالِبٍ آخِرَ مَا كَلَّمَهُمْ هُوَ عَلَى مِلَّةِ عَبْدِ الْمُطَّلِبِ وَأَبَى[/QH]

    ''جب ابوطالب کو موت حاضر ہوئی تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اس کے پاس تشریف لائے تواس کے پاس ابوجہل بن ہشام ، عبداللہ بن ابی امیہ بن المغیرہ کو بیٹھے ہوئے پایا آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : ائے چچا آپ '' لا الہ الاللہ '' کہیں یہ ایسا کلمہ ہے کہ اللہ تعالٰی کے پاس میں اس کی گواہی دے سکوں گا ـ''اس حدیث میں ہے :'' یہاں تک ابو طالب نے ان سے آخری بات یہ کہی کہ میں عبدالمطلب کے دین پر ہوں '' ـتو یہ حدیث دلالت کرتی ہے کہ عبدالمطلب کا دین شرکا دین تھا ، نہیں تو ابوطالب اٖفضل مؤمن ہوتے ''

    اور اسی طرح مشکوٰتہ ( 1541/) ، میں ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ وہ کہتے ہیں کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی والد کے قبر کی زیارت کی ، آپ روئے اور آس پاس لوگوں کو بھی رلا دیا ، پھر فرمایا ، میں نے اپنے رب سے اپنی والدی کے استغفار کی اجازت چاہی مجھے اجازت نہیں ملی ـ اور ان کے قبر کی زیارت کی اجازت مل گئی ، تو قبروں کی زیارت کر لیا کرو اس سے موت یاد آتی ہے ـ کیا یہ صحیح حدیث واضح دلیل نہیں کہ وہ مسلمان نہیں ہوئے تھے ـ نہیں تو اللہ اپنے نبی کو اس کی استغفار سے کیوں منع کرتے ؟واللہ اعلم

    امام نووی نے صحیح مسلم میں باب باندھا ہے '' باب مشرکین کی زیارت کرنا اور یہ دین میں بداہتہ معلوم ہے ـ

    شیخ ابومحمد امین اللہ پشاوری ـ حفظ اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. دلشاد محمدی

    دلشاد محمدی ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 7, 2011
    پیغامات:
    147
    جازاک اللہ خیرا بہت عمدہ
     
  3. فاروق

    فاروق --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏مئی 13, 2009
    پیغامات:
    5,127
    بس شک اس میں کافی لوگوں کو نعی معلومات فراہم ہوئی ہوں گی
    شکریہ آپ کا یا اخی ابو عکاشہ
     
  4. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,867
    وعلیکم السلام
    جزاک اللہ خیر ، بہت ہی اعلٰی
     
  5. رفیق طاھر

    رفیق طاھر علمی نگران ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2008
    پیغامات:
    7,938
  6. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,636
    جزاکم اللہ خیرا
    مفید معلومات ہیں۔
     
  7. salfi_8

    salfi_8 -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 9, 2009
    پیغامات:
    150
  8. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,922
    جزاکم اللہ خیرا.
     
  9. بابر تنویر

    بابر تنویر -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,319
    عکاشہ بھائ السلام علیکم و رحمہ اللہ و برکاتہ،
    بھائ اس کیا حدیث کا مکمل حوالہ مل سکتا ہے۔؟
     
  10. عبد الله السندي

    عبد الله السندي -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 18, 2012
    پیغامات:
    2
    استغفر الله تعالي اي عکاشه توبه کرين اس طرح کهني سي
     
  11. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    اردو مجلس ميں خوش آمديد ، يہاں تعارف كروا كر شكريہ كا موقع ديں ۔
    برادرعكاشہ كيوں توبہ كريں انہوں نے تو رسول اللہ صلى اللہ عليہ وسلم كا فرمان مبارك لكھا ہے ؟
    توبہ وہ كريں جو نبى صلى اللہ عليہ وسلم كى بات نہيں مانتے ، اپنی عقل چلاتے ہيں۔


     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  12. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,867
    [QH]صحيح مسلم - كِتَاب الْإِيمَانِ - باب بَيَانِ أَنَّ مَنْ مَاتَ عَلَى الْكُفْرِ فَهُوَ فِي النَّارِ وَلَا تَنَالُهُ شَفَاعَةٌ وَلَا تَنْفَعُهُ قَرَابَةُ الْمُقَرَّبِينَ
    203 حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ حَدَّثَنَا عَفَّانُ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ سَلَمَةَ عَنْ ثَابِتٍ عَنْ أَنَسٍ أَنَّ رَجُلًا قَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ أَيْنَ أَبِي قَالَ فِي النَّارِ فَلَمَّا قَفَّى دَعَاهُ فَقَالَ إِنَّ أَبِي وَأَبَاكَ فِي النَّارِ [/QH]
    http://hadith.al-islam.com/Loader.aspx?pageid=237&Words=%D8%A3%D9%8E%D8%A8%D9%90%D9%8A+%D9%88%D9%8E%D8%A3%D9%8E%D8%A8%D9%8E%D8%A7%D9%83%D9%8E+%D9%81%D9%90%D9%8A+%D8%A7%D9%84%D9%86%D9%91%D9%8E%D8%A7%D8%B1%D9%90+&Type=phrase&Level=exact&ID=60793&Return=http%3a%2f%2fhadith.al-islam.com%2fPortals%2fal-islam_com%2floader.aspx%3fpageid%3d236%26Words%3d%D8%A3%D9%8E%D8%A8%D9%90%D9%8A%2b%D9%88%D9%8E%D8%A3%D9%8E%D8%A8%D9%8E%D8%A7%D9%83%D9%8E%2b%D9%81%D9%90%D9%8A%2b%D8%A7%D9%84%D9%86%D9%91%D9%8E%D8%A7%D8%B1%D9%90%2b%26Level%3dexact%26Type%3dphrase%26SectionID%3d2%26Page%3d0
     
  13. بابر تنویر

    بابر تنویر -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,319
    جزاک اللہ خیرا بھائ عکاشہ۔
    ہماری ویب کے لیۓ ایک آرٹیکل لکھ رہا تھا اس کے لیۓ یہ حوالہ درکار تھا۔
    سسٹر ام نور العین۔ میرا خیال ہے کہ عبداللہ سندی صاحب کا مختصر تعارف تو ان کے الفاظ سے ظاہر ہے۔
    باقی عکاشہ بھای یقینا اللہ تعالی کا خوف کرتے ہیں۔ خوف تو وہ نہیں کرتے جو کہ قران اور حدیث کو جھٹلاتے ہیں۔ اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو نور کہہ کر ان کی شان کی تنقیص کرتے ہیں۔ اور بدعات کو اپنا کر جہنم میں اپنا ٹھکانا ڈھونڈتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں