حکومت جبل حرا پر لفٹ کیوں نہیں لگواتی ۔۔۔۔۔ !!!

ابوعکاشہ نے 'دیس پردیس' میں ‏دسمبر 15, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,902
    بســـم الله
    السلام علیکم ورحمتہ اللہ ۔
    زائرین حج وعمرہ حجاز مقدس پہنچے کے بعد اپنا انتہائی قیمتی وقت مختلف مقامات کی زیارتوں میں ضائع کرتے ہیں ۔ ان زیارتوں‌میں مجہول قسم کے پہاڑ، بعض پرانے گھر ، مشاعر مقدسہ یعنی منی ، عرفات اور مزدلفہ ، حدیبیہ کا کنواں ، ام ہانی کا گھراور تنعیم یعنی مسجد عائشہ کا غیرمسنون عمرہ وغیرہ شامل ہیں ۔ان سب زیارتوں کی اللہ کی طرف سے کوئی سند نہیں اتاری گئی اور نہ ہی صحابہ کرام رضی اللہ عنہم اس طرح کی زیارتیں کرتے تھے ۔ اس لیے ان کی طرف سفر کرنا غیرشرعی اورگناہ کا کام ہے ۔

    بعض حج یا عمرہ کرنے والے مسلمان صحیح العقیدہ ہونے کے باوجود ان بدعات اور خرافات سے جان نہیں چھڑاپاتے ۔اسی تعلق سے ایک واقعہ پیش خدمت ہے - کوئی تین سال پہلے کی بات ہے کہ ہمارے ایک دوست اپنی والدہ کے ساتھ عمرہ کے لیے حجاز مقدس تشریف لائے ۔ فجر کی نماز سے پہلے فون کیا کہ ہم آپ سے فجر کے بعد ملنا چاہتے ہیں۔

    نمازفجر کے بعد ان سے ملاقات ہوئی ۔ دو تین گھنٹے تک ساتھ رہے ، گفتگو کے دوران مسلمانوں میں پہلی ہوئی بدعقیدگی اور بدعات جیسے موضوعات زیربحث آئے ۔ ہمارے مہمان صحیح العقیدہ تھے اورما شاء اللہ کافی معلومات رکھتے تھے ، انہوں نے توحید کے حوالے سے حکومت کی گئی کوششوں کو سراہا اور یہ بھی کہا کہ حکومت کو چاہے کہ جبل حرا اور جبل ثور پر جو بدعات ہوتی ہیں ، انہیں ختم کرے۔


    ملاقات ختم ہونے کے بعد جب گھر جانے لگا تو دوست کی والدہ محترمہ نے کہا کہ!''بیٹا ! ہمیں جبل حرا کی طرف جانا ہے ، کیا آپ ہمیں وہاں پہنچا سکتے ہیں ؟ میں نے کہا ، آپ نے کیا کرنا ہے ، کہنے لگیں صرف دیکھنا ہے ، دیکھ کر واپس آجائیں گئے ۔ آپ ہمارے ساتھ چلیں ۔ میرے انکار کے باوجود مجھے ساتھ لے گئیں ، راستے میں یہی سوچتا رہا کہ ابھی تو زیارت سے منع کر رہی تھیں اورابھی اچانک جانے کا فیصلہ کرلیا ۔ وہاں پہچنے کے بعد میں نے کہا کہ ، آپ لوگ دیکھ لیں ، پھر واپس چلتے ہیں ، تو کہنے لگیں کہ دل کر رہا ہے اوپر بھی چڑھیں ، ہمارا مقصد کوئی تبرک حاصل کرنا نہیں‌۔ (پچاس ، سال کی عمر میں کسی پہاڑ پرچڑھنا اتنا آسان نہیں) ،مجبورا مجھے بھی ساتھ جانا پڑا، کچھ سفر طے کرنے کے بعد دوست نے بتایا کہ میری والدہ مریضہ ہیں ۔ جلدی تھک جاتی ہیں ، میں نے ان سے پوچھا تو کہنے لگیں کہ میں بلکل ٹھیک ہوں حالانکہ ان کی ظاہری حالت بتا رہی تھی کہ ان کی طبیعت صحیح نہیں‌ تھی ۔ تقریبا ایک گھنٹے کے بعد پہاڑ کی چوٹی پرپہنچے ۔ کچھ دیرآرام کرنے کے بعد کہنے لگیں کہ ! '' حکومت اتنی امیر ہے ، اللہ کا دیا سب کچھ ہے ، میں نے کہا اس میں کوئی شک نہیں ، کہنے لگیں پھر حکومت اس پہاڑ پر لفٹ کیوں نہیں‌ لگواتی !!ابتسامہ

    میں نے کہا ، آنٹی ابھی آپ نے صبح ہی تو کہا تھا کہ یہ سب بدعات وخرافات ہیں ، ختم کردینی چاہیے ، تو کہنی لگیں،بیٹا ! ہم پاکستان میں رہتے ہیں‌، جب عمرہ کرکے جاتے ہیں تو وہاں کے لوگ سوال کرتے ہیں اور انہیں جواب دینا ہوتا ہے ، اس لیے ہماری مجبوری ہے ۔

    یہ ہے وہ مجبوری ۔ اچھے عقیدہ کے حامل مسلمان بھی مجبوری میں غیرشرعی کام کرنے پر مجبور ہیں ۔ اللہ سے دعا ہے کہ وہ ہمیں لوگوں سے بےنیاز کر کے صرف اپنے لیے دین کو خالص کرنے کی توفیق عطا فرمائے ۔ آمین ۔
    اللهم يا مقلب القلوب ثبت قلوبنا على طاعتك ودينك
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. فاروق

    فاروق --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏مئی 13, 2009
    پیغامات:
    5,127
    جزاک اللہ خیرا اخی
    آمین یا رب العالمین
     
  3. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,922
    جزاک اللہ خیرا
     
  4. ابو ابراهيم

    ابو ابراهيم -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مئی 11, 2009
    پیغامات:
    3,871
    تاکہ وہاں پر بدعات کرنے میں آسانى ہو - اللہ ایسے لوگوں کو ہدایت دے - آمین
    آمین یا رب
     
  5. فاروق

    فاروق --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏مئی 13, 2009
    پیغامات:
    5,127
    ویسے ایک بات ایسے بھی کی جاسکتی ہے
    حکومت جبل حرا کو زمین کے برابر کیوں نہیں کردیتی (نہ رہے گا جبل نہ کوئی چڑھے گا اس پر)
     
  6. ابن قاسم

    ابن قاسم محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2011
    پیغامات:
    1,717
    بہت خوب!
    تحریر میں ظرافت کا لطف بکھیرا ہے۔
    شکریہ
     
  7. محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض نوآموز.

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    3,702
    آمین
    جزاک اللہ خیرا
    اللہ ہم سب کو عقیدے پر استقامت عطا فرمائے۔آمین
     
  8. بابر تنویر

    بابر تنویر -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,319
    جزاک اللہ خیرا بھائ عکاشہ
    بھائ میرے نزدیک یہ مجبوری نہیں بلکہ ہمارے عقیدہ کی کمزوری ہے۔ اگر عقیدہ مضبوط ہو تو کوئ مجبوری آڑے نہیں آتی۔
     
  9. عبد الرحمن یحیی

    عبد الرحمن یحیی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2011
    پیغامات:
    2,312
    سعودی حکومت لوگوں کو بدعات سے بچانے کی کوشش کرتی ہے ۔ عکاشہ بھائی آپ نے دیکھا ہو گا جو بھی اس طرح کی خود ساختہ زیارات ہیں وہاں حکومت نے بڑے بڑے بورڈوں پر مختلف زبانوں میں یہ تحریر کر رکھاہے کہ اس پہاڑ پر چڑھنا اور درختوں پر گرہیں لگانا اور پتھروں پر نام لکھناصحیح نہیں ۔۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم ہمارے لیے بہترین نمونہ ہیں
     
  10. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,902
    میرا خیال ہے جبل حرا کو زمین کے برابر کرنا مزید فتنے کو ہوا دینا ہے ۔ خصوصا اس زمانے میں جب کہ معمولی خبر بھی میڈیا پرآکر بڑی خبر بن جاتی ہے ۔
    جی صحیح فرمایا ۔ ایک وجہ یہ بھی ہو سکتی ہے ۔
    درست ۔ جی وہاں پر یہ واضح الفاظ میں لکھا ہوا ہے کہ پہاڑوں پر چڑھنا اور درختوں پر گرہیں لگانا اور پتھروں پر نام لکھنا صحیح نہیں‌، لیکن لوگوں کی برین واشنگ ہوئی ہوتی ہے ، ان ہدایات پر عمل نہیں کرتے ۔

    کچھ عرصہ پہلے مجلس کے ایک معزز رکن نے پاکستان سے پوچھا تھا کہ '' ہمارے ایک جاننے والے کا کہنا ہے کہ'' جبل حرا پر سیڑھیاں‌بنانے کا کام ہو رہا ہے ، آپ بھی اس میں حصہ ملا کر ثواب کمائیے ۔ کیا ایسا کوئی کام ہو رہا ہے یا نہیں‌؟'' اگر یہ ثواب کا کام ہوتا تو حکومت کی طرف سے صرف سیڑھیاں نہیں بنوائی جاتیں بلکہ لفٹ لگوادی جاتی ۔ اس کے لیے چندہ جمع کرنے کی ضرورت نہیں تھی۔
     
  11. فاروق

    فاروق --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏مئی 13, 2009
    پیغامات:
    5,127
    جزاک اللہ خیرا
    درست فرمایا بھائی آپ نے
     
  12. irum

    irum -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,580
    جزاک اللہ خیرا
    آمین
     
  13. عبد الرحمن یحیی

    عبد الرحمن یحیی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2011
    پیغامات:
    2,312
    بھائی سیڑھیاں بنانے کا کام ہوتا ہے جبل حرا پر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہ کچھ اس طرح کے حج کے سیزن میں کچھ پاکستانی بھائی وقفے وقفے پر بیٹھے ہوئے ہوتے ہیں پاس سیمنٹ رکھا ہوتا ہے لوگوں کو اپنی طرف آتا دیکھ کر ان کے ہاتھ حرکت کرنا شروع ہو جاتے ہیں اور لوگوں سے ریال مانگتے ہیں کہ ہم نیک کام کر رہے ہیں۔ پہاڑ پر سیڑھیاں بنا رہے ہیں۔۔سبحان اللہ
     
  14. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    5,050
    کیا ساری دو نمبریاں پاکستانی ہی کرتے ہیں؟
     
  15. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,902
    جی ابواحمد بھائی ۔ صحیح فرمایا ۔ ان پاکستانیوں کا تعلق سندھ سے ہے ، یہ لوگ سارا دن پہاڑ کی چوٹی پر رہتے ہیں ،مغرب سے پہلے اترکر اپنے گھروں کو چلے جاتے ہیں ۔ اتنے سال ہو گئے ابھی تک سیڑھیاں نہیں بنا سکے ، میں نے تو انہیں مشورہ دیا تھا کہ میرے ساتھ چلیں ، کسی ذمہ دار سے ملوا دیتا ہوں ۔ آپ لوگوں کا کام آسان ہو جائے گا ، لیکن وہ لوگ راضی نہیں ہوئے ۔
    ابتسامہ ۔ نہیں ! ایسی بات نہیں ۔ البتہ جبل حرا ور جبل ثور پر پاکستانی ہی نظر آتے ہیں ۔
     
  16. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,399
    زیادہ ثواب کمانے کے گُر بھی پاکستانیوں کو ہی آتے ہیں :00026:
     
  17. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,636
    بہت خوب عکاشہ بھائی۔ :)
    ویسے اگر جبل حرا پر سعودی حکومت لفٹ لگوا دے تو بس لوگ تو پھر وہاں اوپر چڑھنے کے لیے بھی ہر وقت قطاروں میں کھڑے رہیں گے۔ :00005:
    ایک مرتبہ بچپن میں جانے کا اتفاق مجھے بھی ہوا، جب بہت چھوٹے ہوتے تھے۔ والد صاحب سے ضد کر کے چلے گئے۔ جب اوپر پہنچے تو والد صاحب نے کہا کہ بس اب نیچے چلو، تو حیران ہو کر سوچا کہ ابو غار حرا میں کیوں‌نہیں لے کر جارہے۔ بعد میں ابو نے پھر تفصیل بتائی :)، جس کے بعد جتنی دفعہ بھی عمرہ کے لیے گئے، کبھی نہیں گئے۔ ویسے اس وقت جانا بھی مشکل ہوتا تھا، اب تو سنا ہے لوگوں نے باقاعدہ وہاں "سہولت" کے لیے سیڑھیاں بھی بنا دی ہیں۔
    ایک اور بات ہے کہ صرف پاک و ہند کے لوگ نہیں، بہت بڑی تعداد میں مصری، شامی بھی زیارت کی نیت سے جاتے ہیں۔ اللہ ہدایت دے ۔ آمین۔ اس میں قصور عمرہ پیکیج دینے والوں کا بھی ہے، کہ وہ اپنے پوسٹرز اور اشتہاروں اور اپنے اپنے آفسز میں بھی لوگوں سے یہی کہتے ہیں کہ جی ساری "زیارتیں" کروائی جائیں گی۔
     
  18. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,329
    بہت خوب۔
     
  19. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    آمین یا رب العالمین
     
  20. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    بچے شوق شوق میں اوپر گئیے تو بتا رھے تھے کہ پاوں بھی نہیں ہاتھ بھی نہیں اوپر بیٹھے مانگ رھے تھے ایرانی نظر آئیں تو کہتے ھیں حسین کے نام کا دے دو دوسرے لوگ نظر آئیں تو کہتے ھیں اللہ کے نام کا دے دو اگر کسی کو اوپر جانے سے منع کرو تو کہتے ھیں دل تو کرتا ھے نا دیکھیں کہاں قرآن اترا ان سے کہو قرآن جو اترا ھے اس پر عمل کرنے کو کہا گیا ھے تو کہتے ھیں جو ھم کر رھے ھیں وھی صیح ھے
    اللہ ھم سب کو ھدایت دے دے آمین
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں