ڈاکٹر مرتضیٰ بن بخش (حفظہ اللہ ) کا مختصر تعارف

ابوبکرالسلفی نے 'مسلم شخصیات' میں ‏فروری 29, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672
    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم


    فضیلۃ الشیخ ڈاکٹر مرتضیٰ بخش (حفظہ اللہ ) کا مختصر تعارف

    درج ذیل کلام ایک سلفی ویب سائٹ (اصحاب الحدیث ڈاٹ کام) سے آڈیو کی صورت میں حاصل کیا گیا جسے قارئین کے لئے پیش کیا جا رہا ہے۔

    شیخ(حفظہ اللہ) اپنے متعلق ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے فرماتے ہیں:


    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم​

    [FONT="Al_Mushaf"]إن الحمد لله نحمده ونستعينه ونستغفره ونعوذ بالله من شرور أنفسنا ومن سيئات أعمالنا،من يهده الله فلا مضل له ومن يضلل فلا هادي له وأشهد أن لا إله إلا الله وحده لا شريك له وأشهد أن محمدا عبده ورسوله
    صلی اللہ علیہ وآلہ وصحابہ تسلیماً کثیراً
    أمابعد:

    کچھ سوال مؤصول ہوئے ہیں، تقریباً چار سوال ہیں جن میں غلط فہمیاں ہیں، پہلا تو یہ ہے کہ ۔۔
    میرے نام کے متعلق ۔

    ﴿سوال﴾: کہ غلام مرتضٰی بخش تو درست نہیں ہے لیکن مرتضیٰ بخش کیسے درست ہے؟

    ﴿جواب﴾: میں پہلے بھی عرض کر چکا ہوں کہ میرا جو نام تھا پہلےوہ" غلام مرتضیٰ نبی بخش" یہ نام تھا میرا ! جب اللہ تعالیٰ نے ہدایت دی ہے ، الحمدللہ تو میرا نام جو ہے۔۔۔۔۔
    میرے نام سے "غلام "نکال دیا گیا اور میرے والد صاحب کے نام سے "نبی" کا لفظ نکال دیا گیا۔تو مرتضیٰ بخش جو ہے۔وہ میرا اور میرے والد صاحب کا نام ہے۔ بعض ساتھی یوں کہتے ہیں کہ مرتضی ٰ بن بخش ، وہ(یعنی مرتضیٰ بن بخش کہنا ) بات ٹھیک ہے لیکن جو چیز اب عام ہو چکی ہے، مشہور ہو چکی ہے اُس کو میں تبدیل تو نہیں کر سکتا۔

    لیکن یہ ہے کہ جوساتھی مجھے جانتے ہیں وہ جانتے(ہی ) ہیں۔ اور جو نہیں جانتےہیں ، میں باربار بتا چکا ہوں کہ اتنا سمجھ لینا چاہیئے کہ جو شخص ہمیشہ توحید کی بات کرتا ہے، اتباع سنت کی بات کرتا ہے وہ کبھی بھی اپنے نام میں شرک برداشت نہیں کر سکتا۔ الحمدللہ

    لیکن! حق ہے سائل نے پوچھا اور میں نے Clear کر دیا۔


    ایک دوسرے سوال کا جواب دیتے ہوئے شیخ(حفظہ اللہ) فرماتے ہیں:

    (سوال): میں ڈاکٹر کیسے بنا؟

    (جواب): میرے لئے سب سے مشکل مرحلہ یہ ہے، میں نے تعلیم۔۔۔
    ابتدائی اور ثانوی تعلیم یہاں سعودیہ عربیہ میں ہوئی عربی ذبان میں" FSC " تک۔ یعنی میں نے یہاں علم حاصل کیا ، گورنمنٹ کے عام اسکول میں کسی پرائیوٹ اسکول میں نہیں۔عربی میں FSC میں آج بھی آپ دیکھیں عربی میں ہمیں ۔۔۔۔۔
    بیالوجی(Biology) ہے کیمسٹری(Chemistry) ہے فزکس (Physics) ہے ہم عربی میں پڑھتے تھے۔ الحمدللہ، اللہ تعالیٰ کا فضل و کرم ہے والدین کی دعائیں تھیں،اور کچھ محنت بھی میں کرتا تھا۔

    تو نمبر میرے اچھے آگئےاور میڈیکل میں داخلہ مل گیا پاکستان میں اور وہاں پہ میں گیا، میڈیکل کالج میں داخلہ ہو گیا میرے لئے سب سے بڑی مصیبت جو تھی وہ کو ایجوکیشن تھی لڑکے اور لڑکیاں اکھٹے پڑھتے تھے۔زندگی میں کبھی لڑکی کو دیکھا نہیں تھا وہاں ایک ہی کلاس میں پڑھنا ہےکلاس میں داخل ہوتے ہی پسینے چھوٹ جاتے تھےاُس سے بڑی مصیبت یہ تھی کہ مجھے انگلش نہیں آتی تھی اور نہ میں نے انگلش کا کورس کیا تھا اور ساری کی ساری تعلیم انگلش میں۔
    میری عادت تھی یہاں﴿سعودیہ عربیہ میں﴾ الحمدللہ میں نے دسویں ، گیارہویں( اور) بارہویں میں ٹاپ کیاتھا، تو آگے بیٹھتا تھا ہمیشہ وہاں پر بھی آگے بیٹھاعادت تھی کہتے ہیں ناں کہ" اچھے اسٹوڈنٹ جو ہوتے ہیں وہ ہمیشہ آگےبیٹھتےہیں" یہی تربیت تھی شروع سے۔(کلاس کچھ اس طرح‌ہوتی ہے کہ)آگے لڑکیاں ہوتی ہیں پھر ڈیسک ایسے لمبا ہوتا ہے لڑکوں کا۔
    سب سے پہلے میں آگے بیٹھا ہوا تھا فزیولوجی(Physiology) کے جو پروفیسر تھے وہ کچھ پڑھا رہے تھے تو میری عادت تھی میں ہمیشہ آگے بیٹھتا تھا اور لکھتا تھا اس وقت کچھ بدبختی تھی پین کی سیاہی ختم ہو گئی تو میں تو اس طریقہ سے کر کے(یعنی اپنی پین یا کاپی کو چھپا کے)میں نے کیا، کیوئنکہ جو ٹیچر تھے وہ ڈانٹتے تھے جو نہیں لکھتا تھا وہ اچھا طالب نہیں سمجھا جاتا تھا" ایک نہیں دو پین رکھا کرو" یہ کہتے تھے، اور وہاں پہ جا کے (کیوئنکہ) ماحول بھی دوسرا تھا اور بھول گیا دوسرا پین نہیں تھا میرے پاس تو پیپر کوایسے(یعنی چھپا کے) میں نے لکھنا شروع کیا۔ وہ پروفیسر تھا اتنا دور جتنا دور بچے کا وہ کھلونا پڑا ہوا ہے؛ اتنا دور تھا پروفیسر وہاں سے اس نے جان لیا کہ یہ جھوٹ بول رہا ہے(یہاں الفاظ کچھ غیر واضح ہیں)لکھ نہیں رہا کہتا ہے "You(یعنی تم)" اُس نے You کہنا تھا میں نے کانپنا شروع کر دیا Stand-up(کھڑے ہو جاؤ) اب پوری کلاس میری طرف دیکھ رہی ہے اور میری ٹانگیں۔۔۔۔۔۔
    مشکل سے کھڑا ہو گیا اور مجھے کہا "اگر تم لکھ نہیں رہے ہو تو یہ کیوں ظاہر کر رہے ہو کہ تم لکھ رہے ہو، کیوں جھوٹ بول رہے ہو؟" اب مجھے اتنی بھی جراءت نہیں کہ میں کہوں کہ میرا پین ختم ہو گیا ہے۔
    بات وہاں انگلش میں کرنی ہےاُ س نے کہا" میں کیا پڑھا رہا تھا؟"وہ پڑھا رہا تھا مجھے آج بھی یاد ہےUDP پڑھا رہا تھا، بہر حال۔ تو اُس نے کہا "UDP کیا ہے؟" میں جانتا تھا اگر بولتا تھا انگلش میں تو میرا ایکسنٹ عربیوں والا تھا پوری کلاس ہنس پڑتی تھی تو میں نے خاموشی اختیار کی اس نے کہا"آپ کو یہ نہیں آتا ؟ ،یہ بتائیں ATP کیا ہوتا ہےَ؟"
    اب یہ بھی مجھے آتا ہے ATP تو آپ کسی FSC (بلکہ) دسویں کے اسٹوڈنٹ سے پوچھ لیں تو اُس کو بھی آتا ہے تو میں نے یہی کہا کہ اگر میں کہوں اب عربی ایکسنٹ میں:

    "ایڈینو سین ٹرائی فوس فاٹ"(Adenosine Triphosphate)

    یہ عربی کا ایکسینٹ ہے ، اب آپ ہنس رہے ہیں(کیوئنکہ سامعین ایکسنٹ پر ہنس رہے تھے)وہ زیادہ ہنستے تھے اُس وقت تو میں نے خاموشی اختیار کی کوئی جواب نہیں دیا اس نے کہا آپ کو یہ بھی نہیں آتا ڈاکٹر بننے کے لئے آئے ہو جاو پیچھے جا کے بیٹھو اب پیچھے میں کیسے جا کے بیٹھا پیچھے جانے کا راستہ ادھر سے بھی بند اور اُدھر سے بھی بند، اب اوپر سے۔ ڈیسک کے اوپر چھلانگ لگانی ہےلڑکیوں کے آگے سے جانا ہے، پھر پیچھے کی طرف جانا ہے؛ میرے لئے موت تھی اب میں کھڑا ہوں وہ کہہ رہا ہے جاؤ پیچھے جاؤ، جاؤ پیچھے جاؤ۔ تیسری مرتبہ کے بعد میں نے دعاء پڑھی کہ اے اللہ کسی ذریعہ سےبٹھا دے بس، الحمدللہ دعاء قبول ہوئی تنگ ہو کر اُس ے کہا"اچھا بیٹھ جاؤ" (اور میں) بیٹھ گیا ۔

    وہ میرا پہلا اور آخری دن تھا پھر میں جا کے سب سے پیچھے بیٹھتا تھا جب میں واپس گیا ہاسٹل میں تو فیزیولوجی کی کتاب کو اُٹھایا پہلا صفحہ بس پہلا صفحہ مجھے آتا نہیں بس میں کوشش کرتا ہوں تھوڑی سی اور ڈکشنری کے ساتھ عربی، لے کے گیا تھا یہاں سے ترجمہ کیا ایک ایک لفظ کا اور ترجمہ کیا اور پڑھتا گیا جب میں نے پہلا صفحہ ختم کیا ٹائم دیکھا تو 8گھنٹے گزر گئے تھے۔ میں نے پوری کتاب کو ایسے پلٹا 350 صفحے اس ایک کتاب کے اس کو ضرب(Multiply) دیا میں نے8 سے ۔

    میرا کیا میں تو 20 سال میں ڈاکٹر نہیں بن سکتا یہ کب ڈاکٹر بنونگا میں نے اس(کتاب) کو رکھا۔ ۔تیسری مصیبت تھی Fooling (بےوقوفی) Fooling بہت ٹِکا کر کرتے تھے ، میرے دل میں ، آیا تجربہ کروں۔ بہرحال میں نے اپنا سامان وامان پیک کیا اور گھر واپس چلا گیا اور جا کر میں نے کہا یہ ڈاکٹر بننا میرے بس کی بات نہیں ہے ہتھیار ڈال دیئے میں نے ۔

    اللہ جزائے خیر دے میرے والدین دونوں اُمی ہیں اَنپڑھ ہیں ، میری والدہ نے کہادیکھو بیٹا اس دنیا میں کوئی چیز آسان نہیں ہوتی تم محنت کرو تم ڈاکٹر بن جاؤگے میں کچھ نہیں جانتی بچپن سے میں تجھےڈاکٹرکہتی تھی۔ میں(شیخ مرتضیٰ) ابھی تیسری کلاس میں تھا میری والدہ مجھے ڈاکٹر کہتی تھیں کہ" میرا بیٹا ڈاکٹر ہے" بچپن سے میرا خواب تھا تمہیں پورا کرنا ہے میں کچھ نہیں جانتی بس۔۔۔ تم ڈاکٹر بنو گے بس۔۔۔۔ راستہ بند کر دیا اب واپس چلا گیا میرے ذہن میں ایک بات تھی کہ میں نے ڈاکٹر بننا ہے بس، میں نے ڈکشنری کو پھینک دیا اُس کے بعد میں نے آج تک دیکھی نہیں، میرے روم میٹ تھے ان سے میں نے مزاق میں۔ جب بیٹھتےتھے کتاب میرے ہاتھ میں، بیٹھے بیٹھے وہ گپے لگا رہے ہیں میں نے پوچھا اس کا کیا مطلب ہے؟لائن لگا کے اس پر لکھ لیا جلدی سے، دن میں باراہ گھنٹے، میں پڑھتا تھا الحمدللہ جب امتحان ہوا ہم کمرے میں 6 لوگ تھے6 میں سے2 پاس ہوئے ۔ ہم دونوں بارہ گھنٹے پڑھتے تھے باقی پڑھتے نہیں تھے الحمدللہ۔

    کہنے کا یہ مقصد ہےکہ میں نے دنیاوی علم حاصل کرنے کے لئے کتنی محنت کی ہے پھر زندگی میں ایک تھوڑا ٹوئیسٹ آیا کہ دین کا علم حاصل کرنا ضروری ہے ڈاکٹر بن کر میں کبھی جنت میں نہیں جا سکتا جب تک میرا عقیدہ درست نہ ہو، تو پھر میں نے سوچا کہ میں دنیاوی علم حاصل کرنے کے لئے اتنی محنت کر سکتا ہوں تو دین کے لئے کیا نہیں کرسکتا ! دل میں تڑپ تھی کہ علم حاصل کرنا ہے کیسے کروں رہنمائی کسی کی ساتھ نہیں تھی لیکن دعاء ہمیشہ اللہ تعالیٰ سے کی (کہ) اللہ تعالیٰ میرے لئے راستہ آسان کرنا۔ اللہ تعالیٰ نے یہ راستہ آسان کر دیا یہاں (سعودیہ عربیہ) میں آیا اور آہستہ آہستہ اللہ تعالیٰ نے ایسے دروازے کھولے میرے لئے اور میں نے الحمدللہ علم حاصل کرنا شروع کیا اور میں روزانہ 10گھنٹے پڑھتا تھا آج سے 10 سال پہلے اور آج بھی میں6 سے 10گھنٹے روزانہ پڑھتا ہوں۔ کون سی کتابیں؟
    تفسیر ابن کثیر، صحیح بخاری، صحیح مسلم، أبوداود، ترمذی، ابن ماجہ صحاحہ ستہ کی جو کتابیں۔ اور دینی تعلیم دس سال ہو گئے ہیں میں نے میڈیکل کی کتاب کو ہاتھ نہیں لگایاہاں جو نئی نئی ریسرچز ہیں انہیں میں جرنل سا پڑھ لیتا ہوں آسانی سے، لیکن آج بھی میں طالب علم ہوں۔

    اللہ تعالیٰ سے دعاء ہے ، ہمیں علم نافع عمل صالح کی توفیق نصیب فرمائے قرآن و سنت پر چلنے کی توفیق عطافرمائے ہمیں، ہماری ذریت اور تمام مسلمانوں کو شرک، بدعت اور خرافات سے نجات عطافرمائے۔

    میں معذرت چاہتا ہوں کہ میں نے تھوڑا زیادہ وقت لے لیا پرچی دو دفعہ آگئی ہے، میں معزرت چاہتا ہوں۔ بھائیوں کے اسرار پر میں نے یہ بات بیان کی ہے۔

    اللہ تعالیٰ آپ سب کو جزائے خیر دے۔

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

    ایک اور جگہ سوال کے جواب دیتے ہوئے فرماتے ہیں:

    پہلا سوال یہ ہے وہ بھی میرے بارے میں ہے آپ کے نام کے بارے میں ( سائل) کہتا ہے ، آپ کی تعلیم کے بارے میں کہاں سے حاصل کی دینی اور دنیاوی آپ کن اساتذہ کے شاگرد ہیں، کن اساتذہ کے زیر تعلیم ، تعلیم حاصل کر چکے ہیں کیا آپ شروع سے سلفی منہج پر تھے؟ اگر نہیں تو کیسے اس منہج کی طرف آئے ؟

    (جواب): بہرحال میرے متعلق ، میرا نام ہے مرتضیٰ بخش جیسا آپ جانتے ہیں اور میں MBBS ڈاکٹر ہوں۔ میرا نام تھا غلام مرتضیٰ نبی بخش اور میرا تعلق بریلوی خاندان سے تھا میرا نام مرتضیٰ تھا غلام نکال دیا تھا الحمدللہ اور والد صاحب کا نام بخش ہے نبی نکال دیاگیا تو مرتضیٰ بخش یعنی میرا اور میرے والد صاحب کا نام ہے، یہ میرا نام نہیں ہے ، میرا نام مرتضیٰ ہے اور والد صاحب کا بخش ہے۔ اور تعلیم کے متعالق ایم بی بی ایس تعلیم مکمل کرنے کے بعد میں عمرے پر آگیا یہاں﴿سعودیہ عربیہ﴾ پہ عمرہ کرنے کے بعد گیا تو اللہ تعالیٰ کی طرف سے یعنی ایک فضل و کرم ہے میرے اوپر، میرے دل میں بات بیٹھ گئی کہ بریلویت باطل طریقہ ہے اور باطل مذہب ہے اس میں شرک ہے بددعات ہے خرافات ہے بہر حال تو اللہ تعالیٰ نے میرے دل میں یہ بات ڈال دی ، حق کی تلاش اور آسانی بھی اللہ تعالیٰ طرف سے ہوئی مجھے نہیں پتہ تھا ایک چیز جو میں نے میڈکل سے سیکھی ہے وہ ہے محنت میں ڈیلی ﴿روزانہ﴾ 12 سے 14 گھنٹے پڑھتا تھا کیونکہ انگلش مشکل تھی یہاں﴿سعودیہ عربیہ﴾ سے FSC کر کے گیا تھا ، تو ڈیلی 12 سے 14 گھنٹے پڑھتا تھا پہلے دو سالوں میں ، پہلے دو سالوں میں۔ اور مجھے ایک ہمت ملی اور میں نے یہ سوچا کہ اس علم کے لئے اتنا وقت لگا سکتا ہوں تو اللہ تعالیٰ کے دین کے لئے یہ وقت کیوں نہیں لگا سکتا؟ پھر میں نے یہ فیصلہ کیا کہ اس علم کو حاصل کرنا ہے ابتدائی دور میں کوئی خاص اُستاد نہیں تھا کتابوں سے میں نے علم حاصل کرنا شروع کیا ، گھر کے قریب پاکستان میں ایک مسجد ہے اھل حدیث مسجد۔ وہاں سے اللہ تعالیٰ اُنھیں جزائے خیر دے میں اھل حدیث ہوا۔

    اور جو کتاب مجھے چاہیئے تھی وہ مجھے اسی وقت فراہم کر دیتے مکتبہ انکا تھا سب کتابیں موجود تھیں۔
    لیکن ابتدائی دور میں ، میں صرف جن مسائل پر جھگڑتا تھا جیسے عام مسائل ہیں رفع الیدین کا مسئلہ ہے یا آمین بالجہر کا مسئلہ ہے یا سورہ فاتحہ امام کے پیچھے ، یہ مسائل تھے عقیدہ کے مسائل پہ میں نے بہت کم بات سُنی ہے، حق بات ہے۔

    جب میں یہاں سعودی عرب میں آیا آج سے تقریباً 12 سال پہلے 10 -12 سال پہلے تویہاں میں نے منہج دیکھا ایک عقیدہ کا منہج اور جو حق منہج ہے اور میں نے علم حاصل کرنا شروع کیا اللہ تعالیٰ کے گھروں میں میں کسی خاص مدرسے میں نہیں پڑھا نہ کسی کالج سے میں ، میں نے علم حاصل کیا ہے ۔ مساجد اللہ تعالیٰ کے گھروں میں ، میں نے علم حاصل کیا ہے۔

    تفسیر کا علم،عقیدہ کا علم، حدیث کا علم، فقہ کا علم اورعربی گرامر کا علم جتنے بھی علوم کا تعلق ہے شریعت سے اور جن استادوں سے میں نے علم حاصل کیئے ہیں ۔ شیخ ابراہیم المحیمد حفظہ اللہ وہ شیخ بن باز اور ابن عثیمین (رحمہ اللہ علیھم) کے شاگرد ہیں۔

    اور ابھی تک میرے شیخ بھی علم حاصل کر رہے ہیں مدینہ میں شیخ عبدلمحسن حماد بن بدر سے حفطہ اللہ جو آج کے دور کے مُحدَث ہیں۔ شیخ عبیدالجابری سے بھی میں نے علم حاصل کیا ہے الحمدللہ ۔ اور دیگر بھی کافی علماء ہیں۔ جیسے شیخ صالح الفوزان ہیں، شیخ عبدلعزیز الراجحی ہیں، شیخ ابن جبرین ہیں بعض فقہی مسائل میں بھی میں نے ان سے استفادہ حاصل کیا ہے لیکن برائے راہست میں نے جن سے زیادہ علم حاصل کیا ہے وہ شیخ ابراہیم المحیمد اور عبید الجابری ہیں۔

    اور شروع سے جیسا میں نے بیان کیا کہ میں سلفی منہج پر نہیں تھامیرا منہج میں نے بتایا بریلوی تھا میں مگر الحمدللہ جب مجھے اللہ تعالیٰ نے ہدایت دی ہے تو اللہ تعالیٰ نے مجھے منہج کی بھی آسانی فرمائی ہے منہج بھی الحمدللہ ۔ یعنی ایک چیز میں نے دیکھی ہے آپ کو بتا دوں میں نے صرف محنت کی ہے اور کوشش کی ہے اور اللہ تعالیٰ کی طرف سے سب آسانی آئی ہے اور جو میں نے کیا آپ اس سے بہتر کر سکتے ہیں ، میں جانتا ہوں اور اللہ تعالیٰ بہتر جانتا ہے کہ کس طرح آسانیاں ہوئیں میں بیان نہیں کر سکتا اور کن کن لوگوں سے اللہ تعالیٰ نے مجھے جوڑا ہے میں سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔ الحمدللہ

    (شیخ‌کا کلام ختم ہوا)

    الشیخ العلامۃ عبیدالجابری (حفظہ اللہ) کا تزکیہ ڈاکٹر مرتضیٰ بخش (حفظہ اللہ) کے لیے

    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم​

    [FONT="Al_Mushaf"]الحمدللہ وحدہ صلی اللہ وسلم علی نبینا محمد وعلی آلہ وصحبہ
    امابعد [/FONT]

    ہمارے دینی بھائی ڈاکٹر مرتضیٰ بخش حسین پاکستانی ہمارے یہاں حسن سیرت وسلوک اور سنت پر استقامت سے جانے جاتے ہیں۔ اور اس کے ساتھ طلب علم کی حرص اور اس کو حاصل کرنے میں جدجہد کرتے ہیں۔ میرے نزدیک ان شاء اللہ وہ اس علم کو اللہ تعالیٰ طرف دعوت دینے میں بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں۔ ان کی دعوت کے سلسلے میں پہلے بھی قابل تحسین خدمات ہیں۔ یہ سب میں ان کے بارے میں ان تمام برسوں سے جانتا ہوں جن میں وہ ہمارے یہاں طالب رہے۔ چناچہ ان کی طلب پر میں نے یہ شہادت لکھ دی ہے۔ تاکہ وہ متعلقہ افراد کو پیش کر سکیں۔ اللہ تعالیٰ ہم سب کو اس کام کی توفیق دے جسے وہ پسند کرئے اور راضی ہو۔

    والسلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

    کتبہ
    [FONT="Al_Mushaf"]فضیلة الشیخ عبید بن عبد اللہ بن سلیمان الجابری﴿حفظہ اللہ﴾[/FONT]
    ﴿سابق مدرس جامعہ اسلامیہ، مدینہ نبویہ﴾
    اسے دوپہر ، جمعرات 29 ربیع الاول سن 1430ھ بمطابق 26 مارچ سن 2009 ع کو لکھا گیا​

    بشکریہ: اصحاب الحدیث ڈاٹ کام
    کمپوزنگ : ابوبکرالسلفی




    [/FONT]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,922
    جزاک اللہ خیرا.
     
  3. ابو عبداللہ صغیر

    ابو عبداللہ صغیر -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مئی 25, 2008
    پیغامات:
    1,979
    جزاک اللہ خیرا ابو بکر السلفی بھائی
    ڈاکٹر صاحب کی بارے میں پڑھ اور سن کر ایمان تازہ ہو گیا۔
    اس میں ہمارے لیے کافی سارے سبق ہیں
    بے شک اگر انسان محنت کرے تو ہر چیز ممکن ہے بفضل اللہ تعالی
    ڈاکٹر صاحب نے ایسے حالات میں دنیاوی تعلیم حاصل کی جبکہ وہ انگلش بھی نہ جانتے تھے۔
    اور اس سے بڑھ کر جب اللہ تعالی نے توحید کی نعمت عطا تو پہلے سے بھی زیادہ محنت کی۔
     
  4. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672
    آمین یا رب العالمین
     
  5. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    جزاک اللہ خیرا.
     
  6. shaikh babul

    shaikh babul -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 19, 2011
    پیغامات:
    95
    جزاک اللہ خیرا.
     
  7. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    ماشاء اللہ ، بہت عمدہ موضوع ،اس خوب صورت success story كو اتنى محنت سے ہم تك پہنچانے كے ليے اللہ تعالى آپ كو جزائے خير ديں۔
     
  8. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,329
    اللہ اکبر !
    جزاک اللہ خیرا
     
  9. عمر اثری

    عمر اثری -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 21, 2015
    پیغامات:
    461
    کیا ڈاکٹر مرتضیٰ بخش عالم ہیں؟؟؟
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں