پردیس

فاروق نے 'دیس پردیس' میں ‏مئی 28, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. فاروق

    فاروق --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏مئی 13, 2009
    پیغامات:
    5,127
    لوگ سمجھتے ہیں کے پردیس جا کر کام کرنے والوں کی زندگی بہت حسین ہوتی ہے ، ایسا کچھ بھی نہیں ہے. اکثر وہ بیچارے خود اکیلے اور دکھی رہ کر کر اپنے گھر والوں کی زندگی آسان کرنا چاہتے ہیں ، کبھی ان کی جگہ اپنے آپ کو رکھ کر دیکھئے تو اس قید تنہائی کا اندازہ ہو گا آپ کو ، ان کی قربانیوں کی قدر کیجئے اور فضول قسم کی فرمائشوں سے پرہیز کیجئے ، آپ جہاں ان کو اپنی فرمائشیں لکھواتے ہیں وہاں کبھی ان کے دل کا حال بھی جاننے کی کوشش کرنا کہ ان کے شب و دن کیسے گذرتے ہیں ! فضول قسم کی پریشانیوں اور گھریلو جھگڑوں سے ان کو دور ہی رکھیں تو بہتر ہے ، ان سے مثبت باتیں کیا کریں جن سے ان کا حوصلہ بڑھے، !آپ کے چند میٹھے بول ان کی ہمت بڑھا دینگے :) یا الله اپنے گھر سے دور ہر پردیسی کو اپنی حفظ و امان میں رکھنا ...آمین -----------------------------------------------------------------------------------
    " ہم پردیسی " جو گھر سے دُور ہوتے ہیں بہت مجبور ہوتے ہیں کبھی باغوں میں سوتے ہیں کبھی چھپ چھپ کے روتے ہیں گھروں کو یاد کرتے ہیں پھر فریاد کرتے ہیں مگر جو بے سہارا ہوں گھروں سے بے کنارا ہوں اُنہیں گھر کون دیتا ہے یہ خطرہ کون لیتا ہے بڑی مشکل سے ایک کمرہ جہاں کوئی نہ ہو رہتا نگر سے پار ملتا ہے بہت بیکار ملتا ہے
    تو پھر دو تین ہم جیسے ملالیتے ہیں سب پیسے اور آپس میں یہ کہتے ہیں کہ مل جُل کر ہی رہتے ہیں کوئی کھانا بنائے گا کوئی جھاڑو لگائے گا کوئی دھوئے گا سب کپڑے تو رہ لیں گے بڑے سُکھ سے مگر گرمی بھری راتیں تپیش آلود سوغاتیں اور اُوپر سے عجیب کمرہ گُھٹن اور حبس کا پہرہ تھکن سے چُور ہوتے ہیں سکُون سے دُور ہوتے ہیں بہت جی چاہتا ہے تب کہ ماں کو بھیج دے یارب جو اپنی گود میں لے کر ہمیں ٹھنڈی ہوا دے کر سلا دے نیند کچھ ایسی کہ ٹوٹے پھر نہ ایک پل بھی مگر کچھ بھی نہیں ہوتا تو کر لیتے ہیں سمجھوتہ کوئی دل میں بِلکتا ہے کوئی پہروں سُلگتا ہے جب اپنا کام کر کے ہم پلٹتے ہیں تو آنکھیں نَم مکان ویران ملتا ہے بہت بے جان ملتا ہے خوشی مدھوم ہوتی ہے فضا مغموم رہتی ہے بڑے رنجور کیوں نہ ہوں بڑے مجبور کیوں نہ ہوں اوائل میں مہینے کے سب اپنے خون پسینے کے جو پیسے جوڑ لیتے ہیں گھروں کو بھیج دیتے ہیں اور اپنے خط میں لکھتے ہیں ہم اپنا دھیان رکھتے ہیں بڑی خوبصورت گاڑیاں ہیں ہر طرف خوشیاں ہی خوشیاں ہیں ہم یہاں بہت خوش رہتے ہیں جبھی تو واپس نہیں آتے ہیں .. :(
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  2. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672
  3. Ishauq

    Ishauq -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,612
    پردیس کہ زندگی بہت مشکل ھے۔ ہمت ان کی جو اپنے بیوی بچوں کی خاطر پردیس کا دکھ جھیلتے ھیں۔
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں