بلی کو زور سے بنایا؟

رفی نے 'لطائف' میں ‏نومبر 23, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,396
    اللہ کہاں ہے؟

    حمودی: اللہ اُوپل ہے

    حمودی کو کس نے بنایا؟

    حمودی: اللہ نے

    پہاڑ کس نے بنائے؟

    حمودی: اللہ نے

    پھول کس نے بنائے؟

    حمودی: اللہ نے

    بلی کس نے بنائی؟

    حمودی: اللہ نے

    حمودی: بلی کو اللہ نے زول شے بنایا؟؟؟

    :0026::0026::0026:
     
  2. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,849
    السلام علیکم

    آپ کے پاس بلی ھے یا تھی، اگر ہاں تو اس کا رنگ کیا ھے؟ چلیں بلی پر ہی تبادلہ خیال کرتے ہیں۔

    والسلام
     
  3. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,922
    میرے پاس ایک بلا اور ایک بلی ھے.
    بلے کی عمر تین برس، رنگ سفید اور بهورا، نام مانو ھے.
    بلی کی عمر ڈھائی برس رنگ کالا، بهورا اور سفید. نام کیٹی ھے.
    مانو آوارہ گرد اور کیٹی گھر پسند ھے.
    کیٹی صاحبه اسوقت صوفه پر سو رهی ھے. مانو صاحب فجر کے وقت تشریف لائیں گے.
    کیٹی نے دو دقعه بچے دیئے مگر جانبر نه هو سکے. شاید اسکو بچے پالنے کا طریقه ابھی نہیں آیا.
    میں اور میری فیملی بلیوں سے بہت پیار کرتے هیں.
    بعض اوقات هم بلی کے لا وارث بھوک کے مارے بچوں کو ایک دو دن کے لئے اپنا مہمان بناتے هیں. اس دوران کیٹی بہت خفگی کا مظاہرہ کرتی هے اور مانو لاپرواہی.


     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,396
    بلی تو نہیں میرے پاس اور نہ ہی کبھی رکھی (سوائے اپنے سگنیچرز کے)، البتہ سعودیہ میں ان کی اس قدر بہتات ہے کہ اگر گھر کھلا ہو تو کئی آجاتی ہیں۔ اور یہ بچوں سے مانوس بھی بہت ہوتی ہیں۔
     
  5. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    ھمارے گھر تو کیٹی رات بھر باھر رھتی تھی چار چھوٹے معصوم بچے بھی تھے صبح صاحبہ آتی تھیں اور سارا دن نیند سے اس کا برا حال ھوتا تھا بچے تھوڑے بڑے ھوے تو ابو ثوبان اس کو کہیں چھوڑ کر آے صحن گندا کرتے تھے
     
  6. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    جانوروں میں زیادہ مخلص یا ساتھ رہنے والوں میں فی میل آگے آگے رہتی ہیں، لوگ بلے سے زیادہ بلیاں پالتے ہیں کیونکہ یہ باہر کم جاتی ہیں گھر کے لوگوں کے ساتھ ہی رہنا پسند کرتی ہیں مگر بلے ایسا نہیں کرتے جب تک باہر کی سیر نہ کر کے آئیں تب تک ان کو چین نہیں آتا، گھر میں پالی گئی بلیاں کبھی گھر کے چوہوں پر ہاتھ صاف نہیں کرتیں ، ہمارے ایک جاننے والے تھے جنہوں نے گھر میں پالی ہوئی بلی کو کبھی باہر سے گوشت لا کر نہیں‌ ڈالا بلکہ دودھ یا روٹی وغیرہ سے ہی گزارا کرواتے تھے

    مجھے جانوروں اور پرندوں کا بے حد شوق ہے مگر ماں جی کو صفائی بے حد پسندہے اس لیے جانور تو دور کی بات اگر گھر میں‌ کوئی موجود انسان بھی گند ڈال دیں تو غصے میں‌ آجاتی ہیں، کئی سال پرندے رکھے مگر تا حیات رکھنے میں کامیاب نہ رہا :00002:

    کیا واقعی سعودیہ میں اتنی تعداد ان کی پائی جاتی ہے؟

    سسٹر اگر پروپرلی کسی جانور پر گھر میں پالا جائے تو وہ کبھی بھی گھر کو گندہ نہیں کرتے
     
  7. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    کسی کوشوق ھو تو تب یہ سب ھوتاھے میری بیٹی کو صرف شوق ھے اتنا کھلاتی ھے ان کو کہ صحن گندا کرتے ھیں اس سے چوری چھوڑ کے آے بہت روتی تھی کہتی ھے پٹ شاپ سے لے کر دیں اس کے ساتھ چوبیس گھنٹے رھوں پھر چوزے لاتی تھی مر جاتے تھے اتنی دعفہ لا کر دئیے آخرکار تین بڑے ھو گئیے جب ان کو سنبھالنا پڑا تو ان سے خود ھی تنگ آگئی بلی کا شوق ھے کہتی ھے جتنی مرضی لادیں
     
  8. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    ہمممم لاہور مین تو لوگوں کو زیادہ تر کتے پالنے کا شوق ہے ، یا کبوتر ۔ میں نے کافی عرصہ فینسی کبوتر رکھے مگر جب گھر کو پینٹ کروانا تھا بھائی کی شادی پر تو پاپا نے کہا کہ گھر توڑنا پڑے گا کیونکہ دیواروں پر پینٹ کروانا تھا تو سب پرندے دینے پڑے مجھے۔

    ایک مزے کی بات سناتا ہوں ایک دن پاپا کبوتر رکھنے کی وجہ سے بہت غصے میں آگئے کہتے ہیں کہ میں اوپر جا کر تمہارے سارے پرندے اڑا دوں گا ورنہ تم باز نہیں آئو گے میں نے کہا کہ ٹھیک ہے تو انہوں نے چھت پر جا کر پنجرے کا دروازہ کھولا اور اڑا دیئے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اب کوئی بتائے کہ کیا ہوا ہو گا؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟
     
  9. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,922
    کبوتر واپس آگئے؟؟؟
     
  10. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,922
    مانو​


    [​IMG]


    کیٹی​


    [​IMG].
     
  11. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    جی ایسا ہی ہوا ہاہاہاہاہا


    یہ آپ کے گھر میں موجود ہیں کیا ؟
     
  12. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,849
    بلیوں پر بات چلی تو بلی پالنے سے پہلے ان کی نفسیات پر علم ہونا بھی بہت ضروری ھے، بہت شائے ہوتی ہی ہیں اور کچھ فیلنگز انسانوں جیسی بھی ان میں پائی جاتی ہیں۔

    مجھے تو ایسے شوق نہیں مگر جیسا ساجد بھائی نے کبوترں پر لکھا تو جب ہمارے والد محترم بیرون ملک گئے تو میرے چھوٹے بھائی کتا پالنے کا شوق ہوا، اجازت نہیں ملتی تھی والدہ محترمہ کہتی تھیں کہ فرشتے نہیں آتے، مگر پھر بھی میرے ماموں نے اسے کسی دوست سے کہہ کر شکاری کتے کا بچہ لے دیا، جسے گھر کی چھت پر رکھا گیا اور وہی اس کی لک آفٹر کرتا تھا پھر چند دن بعد کسی بھی طرح والدہ محترمہ نے ماموں کو زبردستی کہہ کے اسے واپس بھجوا دیا جہاں سے آیا تھا۔

    اس کے بعد چھوٹے بھائی نے ضد کی کہ اسے کبوتر رکھنے کی اجازت دی جائے کیونکہ ہمارے گھر کے قریب کسی کے پاس ہوتے تھے اور وہ جب انہیں صبح چھوڑتا تھا تو وہ اڑ کے واپس آ جاتے تھے جو بہت بیارے لگتے تھے، میں نے پڑھ بھی رکھا تھا اور پریکٹیکلی مشاھدہ میں بھی تھا کہ جہاں کبوتر ہوں وہاں نحستی بھی ہوتی ھے۔ خیر بھائی نے بہت ضد کی اور میں نے کسی کو پوچھا تو اس نے بتایا کہ باہر دکان سے اگر کبوتر خریدو گے تو 5 روپے میں ایک ملے گا اور مال روڈ پنجاب یونیورٹی کے سامنے بولٹن مارکیٹ ھے جہاں ہر قسم پرندہ مل جائے گا مگر ساتھ بوری لے کر جانا تھوک کے حساب سے کبوتر بہت سستے ملیں گے۔

    ایک دن صبح میں بھائی کے لئے کر بولٹن مارکیٹ چلا گیا 50 روپے میں 30 کبوتر ملے داندار نے ایک کبوتر کے پروں کو دھاگہ سے باندنے کا طریقہ بتایا، گھر آئے ایک لکٹری کا ڈبہ جو چھت پر رکھا، دھاگے کی دو نلکیاں والدہ سے لیں چھت پر جا کر ایک ایک کبوتر کے پر باندھے اور چھوڑتے گئے باجرہ بھی ڈالا اور پانی بھی کسی برتن میں ڈالا، سارا دن کبوتروں کے ساتھ وقف کیا اور جب شام ہونے لگی تو ہم نے سوچا ک سارا دن میں انہیں گھر کی پہچان ہو گئی ھے اور سب کے پروں سے دھاگہ نکال کر انہیں کھول دیا جس پر وہ وہیں رہے پھر جیسا ہم دیکھتے تھے ویسا ہی ایک چھڑی سے کبوتروں کا اڑایا اور سب کے سب اڑ ہی گئے جن میں سے ایک سفید رنگ کے منہ والا جو اڑ کر واپس آیا باقی سب پرمننٹ ہی اڑ گئے اور جو باقی بچہ غصہ سے اسے محلے میں‌ کبوتر والے کو دے دیا۔ اور اس نے بتایا کہ کبوتر کے پر 15 دن تک نہیں کھولتے تبھی جا کر انہیں پہچان ہوتی ھے اپنے گھر کی، لیکن اتنا عرصہ کون انتظار کرے اور شوق بھی ختم ہو گیا۔


    جاری ھے مگر وقت ملنے پر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  13. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,922
    جی بھائی
    نه صرف موجود هیں بلکہ خوب عیش و عشرت میں هیں. یه تصاویر ایک سال سے زیادہ پرانی هیں.
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں