خیبر کے علاقے کی سیر 3

ابو ابراهيم نے 'دیس پردیس' میں ‏جون 3, 2013 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابو ابراهيم

    ابو ابراهيم -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مئی 11, 2009
    پیغامات:
    3,871

    اس کے بعد سیدنا علی ابن ابی طالب رضی اللہ عنہ نے مرحب کے سر پر اس قدر پھرتی ، مہارت اور قوت سے تلوار کا وار کیا کہ وہ وہیں ڈھیر ہو گیا اور چندلمحوں میں واصل جہنم ہو گیا۔
    جنگ کے دوران جب سیدنا علی رضی اللہ عنہ قلعے کے قریب پہنچے تو قلعہ کی بلند چوٹی سے ایک یہودی نے نیچے جھانکا اور پوچھا: تم کون ہو؟ سیدنا علی رضی اللہ عنہ نے فرمایا: میں ابو طالب کا بیٹا علی ہوں۔یہودی کہنے لگا: اللہ کی اس کتاب کی قسم! جو موسی علیہ السلام پر نازل کی گئی تم لوگ سربلند اور غالب ہوئے ۔ اس کے بعد مرحب کا بھائی یاسر قلعے سے باہر نکلا اور اس نے دعوت مبارزت دیتے ہوئے کہا: کون ہے جو آج میرے جیسے شاہسوار کا مقابلہ کرے گا۔ اس کاچیلنج قبول کرتے ہوئے سیدنا زبیر بن عوام رضی اللہ عنہ مقابلے پر آکھڑے ہوئے ۔ جب مقابلہ شروع ہونے کو تھا تو ان کی والدہ سیدہ صفیہ بنت عبد المطلب کوبیٹے کے بارے میں تشویش لاحق ہوئی۔ عرض کیا: یا رسول اللہ!کیا آج میرا بیٹا اس معرکے میں قتل کردیا جائے گا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: نہیں بلکہ آپ کا بیٹا اپنے دشمن کو قتل کر کے کامیاب لوٹے گا۔
    اس کے بعد قلعہ ناعم کے قرب وجوار میں شدید لڑائی ہوئی جس یہود کے کئی ایک نامور جنگجو واصل جہنم ہوئے۔یہ جنگ کئی روز تک جاری رہی اور یہودیوں کی مزاحمت آہستہ آہستہ دم توڑنے لگی۔ انہوں نے جب دیکھا کہ لشکر اسلام کا مقابلہ ان کے بس کا روگ نہیں تو چپکے چپکے یہاں سے کھسکنے لگے اور ایک دوسرے قلعہ صعب میں منتقل ہونے لگے۔ مسلمانوں نے جب دیکھا کہ جنگجو تو راہ فرار اختیار کر چکے ہیں تو انہوں نے آگے بڑھ کر قلعہ پر قبضہ کر لیا۔
    قارئین کرام! جنگ خیبر میں مسلمانوں کو ایک طویل جد وجہد اور بہترین حکمت عملی کے ذریعے کافی محنت کرنی پڑی تب کہیں جاکر خیبر کا علاقہ مسلمانوں کے زیر نگیں آیا ۔ یہودیوں کی ضد، ہٹ دھرمی اور شاطرانہ چالوں کا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے بہت کامیابی سے توڑ کیا اور ایک کے بعد ایک قلعہ فتح کرتے ہوئے پورے خیبر پر اسلام کا علم لہرا دیا۔
    ناعم کے بعد دوسرا بڑا اور مضبوط جنگی محاذقلعہ صعب بن معاذ تھا۔ لشکر اسلام کے جس حصے نے اس قلعے کو فتح کرنے کا کام اپنے ذمے لیا ان کی قیادت سیدنا حُباب بن منذر کے پاس تھی۔تین روز تک اسلامی فوج نے اس قلعہ کا محاصرہ جاری رکھااور تیسرے روز اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے اس کی فتح کے لیے خصوصی دعا فرمائی۔ایک مرتبہ قبیلہ اسلم کے لوگ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں اپنی تنگ دستی اور فقر کی شکایت لے کر حاضرہوئے تو اس وقت اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس انہیں دینے کے لیے کچھ نہ تھا۔ آپ نے اس موقع پر بھی دعا فرمائی تھی کہ یااللہ! میرے پاس انہیں دینے کے لیے کچھ نہیں تواپنے خاص فضل وکرم سے یہود کے ایسے قلعے کو ہمارے لیے مسخر فرما جس میں مال بھی بہت ہو اور خوراک اور چربی بھی وافر مقدار میں ہو۔ چنانچہ اس جنگ میں بنو اسلم کے لوگ ہی زیادہ تر پیش پیش تھے۔اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے دعا فرمائی اور اپنے فوجیوں کو حملے کی دعوت دی۔ تیسرے روز جب جنگ شروع ہوئی تو یہودیوں نے زبردست مزاحمت کی اور بہت سے لوگ ان میں سے قتل بھی ہوئے مگر شام ہونے سے پہلے ہی اللہ تعالی نے اہل اسلام کو کامیابی عطا فرمائی اور قلعہ فتح ہو گیا۔ لشکر اسلام کو اس قلعے کی فتح سے بہت زیادہ مالی اور جنگی فوائد حاصل ہوئے ۔ ایک طرف تو بہت زیادہ کھانے پینے کی اشیاء میسر آئیں اور چربی کا ایک بڑا ذخیرہ ہاتھ آیا تو دوسری طرف کچھ جنگی آلات منجنیقیں اور دبابے بھی ہاتھ لگے۔
    اس کے بعد لگاتار فتوحات کا سلسلہ شروع ہوا اور قلعہ زبیر، قلعہ ابی اور قلعہ نزار مسلمانوں کے قبضے میں آگئے۔ آخری معرکہ کتیبہ کے علاقے میں ہوا۔ یہود کا محاصرہ چودہ روز تک ہوا مگر وہ اپنے قلعوں سے نکلنے کے لیے تیار نہ ہوئے۔ جب اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے منجنیق نصب کرنے کا ارادہ فرمایا تو یہود کو اپنی بربادی کا یقین ہوگیا چنانچہ ایک بات چیت کے نتیجے میں طے پایا کہ یہودیوں کی جو فوج باقی رہ گئی ہے اس کی جان بخشی کر دی جائے گی اور یہ لوگ خیبر کا علاقہ چھوڑ کر چلے جائیںگے۔ یہودی اپنے تمام باغات، زمینیں، سونا، چاندی، گھوڑے اور زرہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے حوالے کر دیں گے اور صرف اتنا کپڑا ساتھ لے جاسکیں گے جتنا ایک انسان اپنی پشت پر اٹھا سکے۔ اس طرح خیبر کی سرزمین یہودیوں کے ناپاک وجود سے صاف ہو گئی اور خیبر اسلامی ریاست کا حصہ بن گیا۔

    ختم شد
     
  2. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    شیئرنگ کا شکریہ بھائی
     
  3. زبیراحمد

    زبیراحمد -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 29, 2009
    پیغامات:
    3,446
    شیئرنگ کا شکریہ
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں