شیخنا الامام المحدث الحافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ کاا ترجمہ

ابن بشیر نے 'مسلم شخصیات' میں ‏نومبر 12, 2013 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابن بشیر

    ابن بشیر ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جنوری 29, 2012
    پیغامات:
    268
    راقم نمازجنازہ میں شریک ہوا تھا ابھی 12نومبر کی صبح مدرسہ دارالحدیث راجووال میں واپس آیا ہوں ،بتوفیق اللہ
    جو بھائی بھی شیخ محترم کے حالات متعلق کوئی معلومات رکھتا وہ ضروری شیئر کرے ۔
    اس مضمون میں صرف حالات زندگی پر بحث ہو گی
    باقی ان کی زندگی کے مخلتف پہلووں پر بات الگ سے شروع کی جا ئے گی ان شائ اللہ
     
  2. ابن بشیر

    ابن بشیر ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جنوری 29, 2012
    پیغامات:
    268
    محققِ دوراں حافظ زبیر علی زئی بن محترم حاجی مجدد خان رحمہ اللہ۔ 25۔جون 1957ء کو حضرو ، ضلع اٹک میں پیدا ہوئے۔

    شیخ زبیر نے ایف۔اے تک باقاعدہ تعلیم حاصل کی ، بعد ازاں پرائیویٹ طور پر بی۔اے اور 1983ء میں ایم۔اے (اسلامیات) اور 1994ء میں ایم۔اے (عربی) پاس کیا۔
    1990ء میں جامعہ محمدیہ جی۔ٹی روڈ گجرانوالہ سے دورہ حدیث کیا اور بفضل تعالیٰ سارے جامعہ میں سر فہرست رہے۔ وفاق المدارس السلفیہ فیصل آباد کا امتحان بھی پاس کیا۔

    1972ء میں صحیح بخاری کی پہلی جلد پڑھی تو اس وقت سے دل کی دنیا بدل گئی اور آپ عامل بالحدیث ہو گئے اور مقصد حیات تبلیغِ حدیث ٹھہرا لیا۔
    آپ نے حدیث نبوی (صلی اللہ علیہ وسلم) کی تعلیم کی خاطر دورِ حاضر کے نامور شیوخ الحدیث سے شرف تلمذ پایا ہے جن میں سے چند اسمائے گرامی یہ ہیں :
    بدیع الدین شاہ راشدی (م:1996ء)
    عطاءاللہ حنیف بھوجیانی (م:1987ء)
    حافظ عبدالمنان نورپوری
    حافظ عبدالسلام بھٹوی
    مولانا اللہ دتہ سوہدروی
    مولانا عبدالغفار حسن
    وغیرہ۔

    آپ کو پشتو ، ہندکو ، اردو ، انگریزی ، یونانی اور عربی میں لکھنے ، پڑھنے اور بولنے پر مکمل عبور حاصل ہے جبکہ فارسی صرف پڑھنے او سمجھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

    1982ء میں آپ کی شادی ہوئی جس سے اللہ تعالیٰ نے تین بیٹے اور چار بیٹیاں عطا فرمائی ہیں۔

    اور 10 نومبر 2013 بروز اتوار کو وفات پائی
     
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں