دہر کو لمحہ موجود سے ہٹ کر دیکھیں

عفراء نے 'کلامِ سُخن وَر' میں ‏ستمبر 14, 2014 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,918
    دہر کو لمحہ موجود سے ہٹ کر دیکھیں
    نئی صبحیں نئی شامیں نئے منظر دیکھیں

    گھر کی دیواروں پہ تنہائی نے لکھے ہیں جو غم
    میرے غم خوار انھیں بھی کبھی پڑھ کر دیکھیں

    آپ ہی آپ یہ سوچیں کوئی آیا ہوگا
    اور پھر آپ ہی دروازے پہ جا کر دیکھیں

    کچھ عجب رنگ سے کٹتے ہیں شب و روز اپنے
    لوگ کیا کچھ نہ کہیں ہم کو جو آ کر دیکھیں​

    مشفق خواجہ​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. بنت امجد

    بنت امجد -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 6, 2013
    پیغامات:
    1,568
    جزاک اللہ خیرا
     
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    شاعر کے گھر میں ڈور بیل کی سہولت نہیں تھی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,918
    اچھی خاصی سنجیدہ شاعری تھی۔۔۔!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  5. ام محمد

    ام محمد -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 1, 2012
    پیغامات:
    3,120
    ہوسکتا ہے لائٹ گئی ہو
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  6. عطاءالرحمن منگلوری

    عطاءالرحمن منگلوری -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 9, 2012
    پیغامات:
    1,478
    زبردست..تبصرے بھی خوب رہے.ابتسامیہ
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں