ناظم کاظمی

المسافر نے 'کلامِ سُخن وَر' میں ‏اپریل 20, 2007 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. المسافر

    المسافر --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏اپریل 10, 2007
    پیغامات:
    6,261
    مجھے محسوس ہوتا ہے کہ لطفِ زندگی کم ہے
    غمِ دل حد سے بڑھ کر ہے،میسر اب خوشی کم ہے

    مسلسل دل کی بے چینی کو کیا کہتے ہیں دل والو؟
    تمھیں معلوم ہو شاید، مجھے تو آگہی کم ہے

    اب اِس کے بعد جسم و جاں کو جلانے سے بھی کیا حاصل
    چراغوں میں لہو جلتا ہے پھر بھی روشنی کم ہے

    جسے بھی دوست سمجھا، دشمنِ ایمان و جان ٹھہرا
    نہیں ہے دوستی جس سے، اسی سے دشمنی کم ہے
     
  2. المسافر

    المسافر --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏اپریل 10, 2007
    پیغامات:
    6,261
    کون اس راہ سے گزرت ہے

    دل يونہي انتظار کرتا ہے

    ديکھ کر بھي نہ ديکھنے والے

    دل تجھے ديکھ ديکھ ڈرتا ہے

    شہر گل ميں کٹي ہے ساري رات

    ديکھيے دن کہاں گزرتا ہے

    دھيان کي سڑھيوں پہ پچھلے پہر

    کوئي چپکے سے پاؤں دھرتا ہے

    دل تو ميرا اداس ہے ناصر

    شہر کيوں سائيں سائيں کرتا ہے
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں