اللہ بندے کو سزا کیوں دیتا ہے؟

ابوعکاشہ نے 'نثری ادب' میں ‏جولائی 31, 2015 کو نیا موضوع شروع کیا

Tags:
  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,859
    اللہ بندے کو سزا کیوں دیتا ہے؟

    اللہ بندے کو سزا کیوں دیتا ہے؟ مجھے اس سوال کا ایسا جواب ملا کہ آج تک مطمئن ہوں

    ہمارے ویٹنری ڈپارٹمٹ کے پروفیسر ہوا کرتے تھے ____ میرے اُن سے اچھے مراسم تھے
    یہ یو نیورسٹی میں میرا تیسرا سال تھا _____
    اک دفعہ میں انکے دفتر گیا۔
    مجھ سے کہنے لگے: اک مزے کی بات سناؤں تمہیں؟ ؟
    جی سر ضرور

    پچھلے ہفتے کی بات ہے
    میں اپنے دفتر می‍ں بیٹھا تھا
    اچانک اک غیر معمولی نمبر سے مجھے کال آئ:

    "پندرہ منٹ کے اندر اندر اپنی سراونڈگنز کی کلیئرنس دیں!""________

    ٹھیک پندرہ منٹ بعد پانچ بکتر بند گاڑیاں گھوم کے میرے آفس کے اطراف میں آکر رکیں
    سول وردی میں ملبوس تقریباً حساس اداروں کے لوگ دفتر می‍ں آئے

    ایک آفیسر آگے بڑھا _____

    " """'"امریکہ کی سفیر آئ ہیں ____
    انکے کتے کو پرابلم ہے اسکا علاج کریئے ___""""
    تھوڑی دیر بعد اک فرنگی عورت
    انکے ساتھ انکا ایک عالی نسل کا کتا بھی تھا __

    کہنے لگیں ____
    میرے کتے کے ساتھ عجیب و غریب مسئلہ ہے
    میرا کتا نافرمان ہوگیا ہے ____
    اسے میں پاس بلاتی ہوں یہ دور بھاگ جاتا ہے
    خدارا کچھ کریے یہ مجھے بہت عزیز ہے اسکی بے عتنائ مجھ سے سہی نہیں جاتی

    میں نے کتے کو غور سے دیکھا ___
    پندرہ منٹ جائز لینے کے بعد میں نے کہا

    میم!!

    یہ کتا ایک رات کے لیے میرے پاس چھوڑ دیں میں اسکا جائزہ لے کے حل کرتا ہوں
    اس نے بے دلی سے حامی بھرلی _______

    سب چلے گئے ____
    میں نے کمدار کو آوز لگائ

    فیضو اسے بھینسوں والے بھانے میں باندھ کے آ۔۔۔
    سن اسے ہر آدھے گھنٹے بعد چمڑے کے لتر مار۔۔
    ہر آدھے گھنٹے بعد صرف پانی ڈالنا ___ جب پانی پی لے تو پھر لتر مار______!!!

    کمدار جٹ آدمی تھا۔ ساری رات کتے کے ساتھ لتر ٹریٹ منٹ کرتا رہا ______
    صبح میں پورا عملہ لئے میرے آفس کے باہر
    سفیر زلف پریشاں لئے آفس میں آدھمکی

    ________Sir what about my pup ?

    I said ___Hope your pup has missed you too .....

    کمدار کتے کو لے آیا ____

    جونہی کتا کمرے کے دروازے میں آیا
    چھلانگ لگا کے سفیر کی گود میں آبیٹھا
    لگا دم ہلانے منہ چاٹنے ________!!!
    کتا مُڑ مڑ تشکر آمیز نگاہوں سے مجھے تکتا رہا _____
    میں گردن ہلا ہلا کے مسکراتا رہا_____

    سفیر کہنے لگی: سر آپ نے اسکے ساتھ کیا کیا کہ اچانک اسکا یہ حال ہے _____؟؟؟

    میں نے کہا:
    ریشم و اطلس ، ایئر کنڈیشن روم، اعلی پائے کی خوراک کھا کھا کے یہ خودکو مالک سمجھ بیٹھا تھا اور اپنے مالک کی پہچان بھول گیا ____بس
    اسکا یہ خناس اُتارنے کے لیے اسکو ذرا سائیکولوجیکل پلس فیزیکل ٹریٹمنٹ کی اشد ضروت تھی ____وہ دیدی۔۔۔ ناؤ ہی از اوكے

    منقول، بک کارنر ،جہلم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 7
    • مفید مفید x 1
  2. تجمل حسین

    تجمل حسین رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏مارچ 19, 2014
    پیغامات:
    143
    زبردست۔ بہت ہی اعلیٰ اور سبق آموز۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. بنت امجد

    بنت امجد -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 6, 2013
    پیغامات:
    1,569
    جزاک اللہ خیرا
     
  4. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,920
    اچھی تحریر ہے۔ جزاک اللہ خیرا۔
     
  5. جمیل

    جمیل ركن مجلسِ شوریٰ

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2009
    پیغامات:
    750
    اللهم إني أعوذ بك من زوال نعمتك وتحول عافيتك وفجاءة نقمتك وجميع سخطك (مسلم) آمين

    Sent from my HUAWEI P7-L10 using Tapatalk
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    بہت سے لوگ سمجھتے ہیں کہ مادی اشیا کا نہ ہونا اللہ کا غضب ہے اور ان کا ہونا اللہ کی خوشی۔اسی فلسفے کی وجہ سے لوگ غربت سے نفرت کرتے کرتے خدا سے شاکی ہو جاتے ہیں کہ وہ ہم سے ناراض کیوں ہے۔ یہ بھی وہی فلسفہ لگ رہا ہے۔ اس اصول میں غلطی یہ ہے کہ بہت سے امیر لوگ ہمیشہ ظلم و کفر پر ڈتے رہتے ہیں ان کو دنیا میں کوئی جوتے نہیں لگتے جب کہ نیک لوگ اللہ کی خاطر اصولوں پر جمے رہنے کی وجہ سے جان، مال، عزت ہر چیز میں آزمائے جاتے ہیں۔
    قرآن کا مطالعہ یہ بتاتا ہے کہ انسان ہر وقت آزمائش میں ہے۔ جن کے پاس اطلس و حریر ہے وہ ان کی آزمائش ہے جو فاقہ کاٹ رہے ہیں وہ ان کی آزمائش ہے۔ اصل کامیاب وہ ہے جس سے خدا خوش ہےاور خدا کی خوشی کا کوئی تعلق مادی اشیا ء سے نہیں۔ کچھ لوگ فاقوں میں بھی روحانی لذت پا لیتے ہیں اور کچھ لوگ امیری میں بھی اللہ کی اطاعت کرتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
  7. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,859
    یہاں سزا یا آزمائش ایک معنی میں درست ہے ۔ وضاحت نہیں ، اس لئے اس کو فلسفہ کہ سکتے ہیں ، ایسے لوگوں کے ہاں سزا و جزا کا مفہو م مختلف ہوتا ہے ۔ کیونکہ یہ لوگ اللہ کے اسماء و صفات سے واقفیت نہیں رکھتے ۔ بیماری ، آزمائش کی مسنون دعاؤں پر نظر ڈالی جائے تو معلو م ہوگا ، کوئی بھی دعا ایسی نہیں ، جس میں اللہ کا کوئی اسم یا صفت نا ہو ۔اسماء وصفات پر ایمان ہی مادی اشیاء سے تعلق ختم کردیتا ہے ۔ اللہ کے ہاں سزار و جزا بھی اہل ایمان اور نافرمانوں کے ساتھ مختلف ہے ۔ دونوں برابر نہیں ہوسکتے ۔اس لئے اہل علم نے گمراہیوں کی جڑ اسماء وصفات میں الحاد کو کہا ہے ۔قرآن میں بھی اشارہ ہے ۔ مزید یہ کہ ادب یا ادیب ، شاعر حضرات کتنا رب کی پہچا ن رکھتے ہیں ۔ یہ تو ان کے کلام سے واضح ہوتا ہے ۔ بہت کم لو گ ہوتے ہیں جو اس میدان میں ناجیہ میں رہتے ہیں ۔ اس لئے اس طرح کی فلسفیانہ باتوں کی اہمیت بھی اسرائیلی روایات کی طرح ہے ۔ جو دین سے موافق ہو لے لیا جائے ۔ باقی چھوڑ دیا جائے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  8. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,316
    بہت خوب! سبق آموز تحریر۔
    شئرنگ کا شکریہ
     
  9. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,397
    اللہ بندے کو سزا نہیں دیتا، بلکہ سبق دیتا ہے اور امتحان لیتا ہے، سزا تو آخرت میں ملے گی!
     
    • متفق متفق x 1

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں