راہبر سو گئے ہم سفر سو گئے، کون جاگے گا ہم بھی اگر سو گئے

عائشہ نے 'کلامِ سُخن وَر' میں ‏فروری 14, 2016 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    راہ بر سو گئے، ہم سفر سو گئے
    کون جاگے گا ہم بھی اگر سو گئے

    گیسوئے وقت اب کون سلجھائے گا
    بے خبر جاگ اٹھے، با خبر سو گئے

    یہ ہمارے مقدر کا اندھیر ہے
    جب بھی نزدیک آئی سحر سو گئے

    مٹ گیا دل سے کیا خوف دارو رسن
    لوگ پھولوں پہ کیا سوچ کر سو گئے

    اس حقیقت سے انکار ممکن نہیں
    سو گئی قوم جب دیدہ ور سو گئے

    اپنی بربادیاں اپنے ہاتھوں ہوئیں
    جاگنا تھا ہمیں ہم مگر سو گئے

    بے گھروں کو تکلف سے کیا واسطہ
    نیند آئی سرِ رہ گزر سو گئے

    وہ گئے گھر کی رعنائیاں بھی گئیں
    یوں لگا جیسے دیوارودر سو گئے

    تم تو اعجاز پھولوں پہ بے چین ہو
    جن کو سونا تھا وہ دار پر سو گئے
    شاعر: اعجاز رحمانی​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 6
  2. حبیب صادق

    حبیب صادق -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 15, 2013
    پیغامات:
    32
    ماشاء اللہ
    عمدہ اور خوب صورت کلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,397
    بہت عمدہ شیئرنگ، جزاک اللہ خیرا!
     
  4. سیما آفتاب

    سیما آفتاب محسن

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    486
    بہت عمدہ انتخاب (y)
    جزاک اللہ خیرا
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں