آدابِ د وستی

باذوق نے 'اسلامی متفرقات' میں ‏مئی 30, 2008 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. باذوق

    باذوق -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 10, 2007
    پیغامات:
    5,623
    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

    آدابِ د وستی

    ** دوست بنائیے اور دوست بنیے۔

    ** دوستوں سے محبت کیجئے۔

    ** دوستوں کے لیے مرکزِ محبت بنیے۔

    ** دوستوں کے ساتھ مل جل کر میل محبت کی زندگی گزاریے اور مخلصانہ تعلقات قائم کرنے اور قائم رکھنے کی کوشش کیجئے۔

    ** دوستوں سے نفرت ، بیزاری اور لیے دیے رہنے کی روش مت اپنائیے۔

    ** دوستوں پر اعتماد کیجئے ، اُن کی صحبت میں بے تکلف اور خوش مزاج رہئے۔

    ** دوستوں کے درمیان اپنی خوش طبعی اور ظرافت کو حد سے بڑھنے نہ دیجئے۔ حمیت و غیرت ، توازن و اعتدال کا بھی لحاظ رکھئے۔

    ** دوستوں سے اپنی محبت کے اظہار اور تعلقات کی نوعیت میں ہمیشہ میانہ روی اختیار کیجئے۔ نہ تو ایسی سردمہری اختیار کریں کہ آپ کی محبت مشکوک نظر آئے اور نہ اتنا جوشِ محبت دکھائیں کہ جنون کی شکل محسوس ہو۔

    ** دوستوں کے صرف وہی عیوب بیان کریں جو عام زندگی سے آپ کے سامنے آئیں۔ تجسس اور ٹوہ میں لگ کر اپنے دوست کے پوشیدہ عیبوں کو مت کریدیں۔

    ** دوست کے عیوب اسی وقت واضح کریں جب وہ خود کو تنقید کے لیے آپ کے سامنے پیش کرے اور فراخدلی سے تنقید و احتساب کا موقع دے۔

    ** دوست کے انتخاب میں انتہائی غور و فکر سے کام لیں۔ اور قلبی لگاؤ اسی سے بڑھائیں جس کا ذوق و رحجان ، افکار و خیالات اور دوڑ دھوپ ... دین و ایمان کے تقاضوں کے مطابق ہو۔
    نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا فرمانِ مبارک ہے :
    " آدمی اپنے دوست کے دین پر ہوتا ہے۔ اس لیے ہر آدمی کو غور کرلینا چاہئے کہ وہ کس سے دوستی کر رہا ہے۔"
    (مسند احمد ، مشکوٰۃ )
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں