باعمل عالم کی فضیلت

ساجد تاج نے 'متفرقات' میں ‏اپریل 23, 2016 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    "باعمل عالم کی فضیلت"

    قیس بن کثیر کہتے ہیں :
    ایک شخص مدینہ سے ابوالدرداء رضی اللہ عنہ کے پاس دمشق آیا...
    ابوالدرداء رضی اللہ عنہ نے اس سے کہا:
    میرے بھائی! تمہیں یہاں کیا چیز لے کرآئی ہے!!!
    اس نے کہا:
    مجھے یہ بات معلوم ہوئی ہے کہ آپ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ایک حدیث بیان کرتے ہیں....
    ابوالدرداء نے کہا:
    کیا تم کسی اور ضرورت سے تو نہیں آئے ہو؟؟؟
    اس نے کہا:
    نہیں!!!
    انہوں نے کہا:
    کیا تم تجارت کی غرض سے تو نہیں آئے ہو؟
    اس نے کہا:
    نہیں!! میں تو صرف اس حدیث کی طلب و تلاش میں آیا ہوں...
    ابوالدرداء نے کہا:
    (اچھا تو سنو) میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا:
    جو شخص علم دین کی تلاش میں کسی راستہ پر چلے...
    تو اللہ تعالیٰ اس کے ذریعہ اسے جنت کے راستہ پر لگا دیتا ہے...
    بیشک فرشتے طالب (علم) کی خوشی کے لیے اپنے پر بچھا دیتے ہیں...
    اور عالم کے لیے آسمان و زمین کی ساری مخلوقات مغفرت طلب کرتی ہیں....
    یہاں تک کہ پانی کے اندر کی مچھلیاں بھی...
    اور عالم کی فضیلت عابد پر ایسی ہی ہے جیسے چاند کی فضیلت سارے ستاروں پر....
    بیشک علماء انبیاء کے وارث ہیں اور انبیاء نے کسی کو دینار و درہم کا وارث نہیں بنایا...
    بلکہ انہوں نے علم کا وارث بنایا ہے...
    اس لیے جس نے اس علم کو حاصل کرلیا....
    اس نے (علم نبوی اور وراثت نبوی سے ) پورا پورا حصہ لیا.....

    ترمذی، ح:2682 (صحیح)
    وضاحت :
    اس حدیث سے معلوم ہوا کہ علماء و محدثین بہت بڑی فضیلت کے حامل ہیں، حصول علم کے لیے دور دراز کا سفر درکار ہے، یہ سفر خالص علم دین کی نیت سے ہو کوئی دنیوی غرض اس کے ساتھ شامل نہ ہو، علم دین حاصل کرنے والے کے لئے جنت کا راستہ آسان ہو جاتا ہے، کائنات کی ساری مخلوق اس کے لیے مغفرت طلب کرتی ہیں، علماء انبیاء کے حقیقی وارث ہیں۔
    مزید:

    ابو امامہ باہلی کہتے ہیں :
    رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے سامنے دو آدمیوں کا ذکر کیا گیا....
    ان میں سے ایک عابد تھا اور دوسرا عالم....
    تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:
    '' عالم کی فضیلت عابد پر ایسی ہے جیسے میری فضیلت تم میں سے ایک عام آدمی پر ہے''...
    رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:

    '' اللہ اور اس کے فرشتے اور آسمان اور زمین والے یہاں تک کہ چیونٹیاں اپنی سوراخ میں اور مچھلیاں اس شخص کے لیے جو نیکی و بھلائی کی تعلیم دیتا ہے خیر و برکت کی دعائیں کرتی ہیں"....
    ترمذی، ح:2685 (صحیح)

    فضیل بن عیاض کہتے ہیں ملکوت السماوات ( عالم بالا) میں عمل کرنے والے عالم اور معلم کو بہت بڑی اہمیت و شخصیت کامالک سمجھا اور پکارا جاتا ہے۔
     
    • متفق متفق x 1
  2. نصر اللہ

    نصر اللہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏دسمبر 19, 2011
    پیغامات:
    1,845
    اللہ اکبر۔
    من سلک طریقا یلتمس فیہ علما سھل اللہ بہ طریقا الی الجنہ۔
    اللہ ہمیں ایسے لوگوں میں سے بنادیں اور اپنے دین کا کام لے لیں،اللہ رب العزت اخلاص کی نعمت سے نوازیں ۔
    آمین۔
    بارک اللہ فیک اچھا انتخاب کیا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں