دائیں اور بائیں بازو کے چہیتوں کی گمشدگی

عائشہ نے 'ذرائع ابلاغ' میں ‏جنوری 16, 2017 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    کچھ سال پہلے سوشل میڈیا پر دائیں اور بائیں بازو کے انتہاپسندوں کو دیکھ کر خیال آتا تھا کہ "پاکستان میں بہت ہی زیادہ آزادی ہے"۔
    اللہ کا شکر ہے کہ 2015 تا 2016 میں ریاست کے ادارے کچھ جاگتے ہوئے نظر آئے، دہشت گردی کے واقعات میں نمایاں کمی ہوئی، اہل وطن نے بہت عرصے بعد ایک پرامن موسم سرما کا لطف اٹھایا۔ دوسری طرف سوشل میڈیا پر فسادیوں اور ملحدوں (دشمنان وطن و دشمنان دین) کی ویب سائٹس کا زور بھی کچھ کم ہوا۔ البتہ آج کل ایک نئی پراسرار لہر نے کئی لوگوں کو ٹھٹھرا کر رکھ دیا ہے۔ یہ لہر ہے گمشدگیوں کی۔
    دائیں بازو کے لوگ ہوں یا بائیں بازو کے اپنے اپنے چہیتوں کی گمشدگی کی شکایت کرتے نظر آ رہے ہیں۔ افسوس کیا جا رہا ہے کہ صرف بات کرنے پر لوگوں کو اٹھا لیا جاتا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ افسوس ان پر ہے جو بات کرنے کا سلیقہ نہیں جانتے۔ جو لوگ سوچتے ہیں کہ وہ کسی وطن میں رہیں، اور اس کی سرحدیں گرانے کی دعوت بھی دیں، اس کے محافظوں کا مذاق اڑائیں، ان کی قربانیوں پر انگلیاں اٹھائیں، یا جو سمجھتے ہیں کہ وہ خود کو ایک دین کا نام لیوا ظاہر کریں اور پھر اس کے قوانین کے متعلق ہفوات بکیں، اس کی مقدس ہستیوں کی توہین کریں، وہ یہ کیوں بھول جاتے ہیں کہ بات کرنے کی آزادی کی ایک حد ہوتی ہے؟ دنیا کے ہر مذہب اور ہر وطن میں غداری ایک جرم ہے۔ اہل قلم کا کمال یہ نہیں کہ وہ آگ لگا دیں۔ اہل قلم کا کمال یہ ہے کہ وہ انسان کو پیچیدہ سے پیچیدہ مسائل پر حد میں رہ کر بات کرنا سکھائیں۔ اخلاص، قربانی، تدریج اور مستقل مزاجی کے بغیر کسی معاشرتی انقلاب کی امید لگانا بے کار ہے۔
     
    Last edited: ‏جنوری 16, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,496
    ایک وضاحت کردوں۔ یہ تحریر صرف پاکستان میں آزادیء اظہار پر پابندی کا شکوہ کرنے والوں کے متعلق ہے۔ دوسرے ممالک کے متعلق اس میں کچھ نہیں کہا گیا۔
    کچھ اہل علم شخصیات کے متعلق بعض افواہیں سننے میں آئی ہیں۔ جب تک خبر کی تصدیق کسی ذمہ دار ذریعے سے نہ ہو اس پر تبصرہ کرنا مناسب نہیں۔ اللہ ہم سب کو دین میں کسی آزمائش سے محفوظ رکھے اور دنیاوی آزمائشوں میں حق پر ثابت قدم رکھے۔
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں