مسلمان مردوں کا ذوق نظر

عائشہ نے 'اركان مجلس كے مضامين' میں ‏فروری 19, 2017 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    پہلے سنا کرتے تھے کہ مسلمان #مرد کسی کافر #عورت کو بھی مصیبت میں دیکھتے تو اس کو #چادر سے ڈھانپ دیتے تھے۔ آج کے مسلمان مرد نے بہت ترقی کر لی ہے۔
    ٹی وی موبائل، کمپیوٹر، ٹیبلٹ کی رنگین سکرینوں پر ہر قسم کی عورت دیکھنے کو میسر ہے، کالی ، گوری، زرد، موٹی، پتلی، لمبی، ٹھگنی، لیکن پھر بھی اس کا نظر بازی کا شوق پورا ہو کر نہیں دے رہا۔ فلمی اداکارہ اور عام عورت کی تمیز مٹ گئی ہے۔ مسلم ممالک میں کسی دھماکے کے بعد پریشان حال زخمی عوتوں کی تصویریں ہوں یا کالج کی معصوم لڑکیوں کا گروپ فوٹو، ہر عمر ہر نسل کی صنف مخالف مسلم نوجوانوں کے لیے تفریح کا سامان ہے۔ ان کے پاس ایک ہی دلیل ہے انہوں نے #تصویر بنوائی کیوں؟ یہ خیال شاید ہی آئے کہ آپ نے اپنی قبر میں جانا ہے جہاں اپنی نظروں کا حساب دینا ہے صنف مخالف کے لباس کا نہیں۔
    آج کل #برما (اراکان) کی آفت زدہ، اور بے حال خواتین کی نیم برہنہ وڈیوز بہت تیزی سے شئیر ہو رہی ہیں۔ یہ مظلوم کی حمایت کا نیا انداز ہے۔ سچ ہے ہوس بڑھتی جائے تو بے قابو ہو جاتی ہے۔ اس کتے کی طرح جس کی زبان ہر وقت باہر لٹکی رہتی ہے۔
    میں صرف ایک بات سوچتی ہوں اور کانپ جاتی ہوں کہ اگر ان برمی مسلم بہنوں نے کل قیامت کے روز ہمیں پکڑ کر کہا خدایا یہ ہمارے پڑوس میں رہتی تھیں ان کے سروں پر چادریں تھیں ان کی الماریوں میں ملبوسات کے ڈھیر تھے لیکن ان سے اتنا بھی نہ ہو سکا کہ ہماری بے بسی کے عالم میں بنائی تصویروں کے خلاف آواز ہی اٹھا دیتیں تو میں کہاں چھپ سکوں گی۔
    کیا ہم اسی دین کے پیرو ہیں جس نے کسی دوسرے انسان کے #ستر کی طرف دیکھنا حرام کیا ہے؟ کجا کہ صنف مخالف؟
    وہ مرد جو آج صحیح سلامت بیٹھے کسی مسلمان خاتون کی ستر کی حرمت پامال کر رہے ہیں، کل ان کے گھر کی عزتوں پر ایسی آفت آ گئی تو وہ کتنے #کیمرے روک سکیں گے؟ وہ خواتین جو ایسی تصویریں شئیر کر رہی ہیں کیا وہ اپنی ایسی تصویر دنیا کے سامنے آنا پسند کریں گی؟ آخر یہ بے حسی کا کون سا درجہ ہے جہاں ہم پہنچ گئے ہیں؟
    (جون 12، 2015)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • متفق متفق x 2
  2. عطاءالرحمن منگلوری

    عطاءالرحمن منگلوری -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 9, 2012
    پیغامات:
    1,474
    جزاک اللہ خیرا...یہ فکر انگیز تحریر پڑھ کر امت مسلمہ کی زبوں حالی پہ جیسے نوحہ کہنے کو جی چاہا..بقول کسے
    مکیں مر چکے ہیں مکاں لٹ چکے ہیں
    مکیں ڈھونڈتا ہوں مکاں ڈھونڈتا ہوں
    عرب سے چلے اور ملتان پہنچے
    میں اس جیسا کوئ حکمراں ڈھونڈتا ہوں.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • مفید مفید x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں