تربیت اولاد۔۔چند تجاویز

سیما آفتاب نے 'مجلس اطفال' میں ‏مارچ 29, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. سیما آفتاب

    سیما آفتاب محسن

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    486
    صورت حال کچھ ایسی ھوگئ ھے کہ بچے والدین کو اپنا دشمن تصور کرنے لگے ھیں، جو انہیں دن رات ان کے ناپسندیدہ ترین کام کرنے پر مجبور کرتے ھیں۔۔۔
    ہاتھ دھو لو
    رومال استعمال کرلو اللہ کے بندے
    اپنا کوٹ لٹکا دو
    اپنا کام ختم کرلو
    فورا واپس آو اور ٹائلٹ کا پانی چلاو
    اپنے بستر پر جاو۔۔سونے کا ٹائم ھے
    کرسی کو لات مت مارو
    صوفے پر چھلانگیں مت لگاوٹ
    بلی کی دم کھینچنا چھوڑ دو
    اپنے ناک میں موتی مت ڈالو
    بچے اپنی مرضی کرنا چاھتے ھیں اور ھم اپنی مرضی چلانا چاھتے ھیں۔۔۔اور یہ ایک نا ختم ھونے والا جھگڑا بن جاتا ھے۔۔۔یہاں تک کہ جب ھمیں کبھی بچے سے کوئی کام کرانا ھوتا ھے تو ھمارے اندر ایک انتہائی ناخوشگوار ابال سا محسوس ھوتا ھے اور کبھی اندر آرے سے چلنے شروع ھوجاتے ھیں۔۔۔!
    کیا حل ھے اس مشکل ترین کام کا؟
    آج میں 5 ایسے طریقے بتاتی ھوں جن سے کارعظیم کچھ آسان ھوجائے گا انشاءاللہ
    1۔ جو نظر آرہا ھے اس کو بیان کریں۔۔منظر کشی کریں؛
    گیلا تولیہ میرے بستر پر پڑا ھے
    کھلونے ھر طرف بکھرے ھوئے ھیں
    دودھ باہر پڑا ھے
    2۔ معلومات دیں؛
    گیلے تولیے کی وجہ سے میرا بستر گیلا ھورہا ھے
    دودھ باہر پڑا رہے تو خراب ھوجاتا ھے
    کھلونے پاوں کے نیچے آجائیں تو چوٹ لگ سکتی ھے
    3۔ صرف ایک لفظ سے بتادیں؛ بچوں کو لیکچر پسند بھی نہیں ھوتے اور پراثر بھی نہیں ھوتے؛
    تولیہ
    دودھ
    کھلونے۔۔!
    4۔ اپنے جذبات کا اظہار کریں؛
    مجھے گیلے بستر پر سونا اچھا نہیں لگتا
    مجھے بکھرے کھلونے برے لگتے ھیں
    باہر رکھنے کی وجہ سے دودھ خراب ھوجائے تو مجھے افسوس ھوگا
    5۔ ایک نوٹ لکھ دیں؛
    "پلیز مجھے استعمال کے بعد دوبارا لٹکا دیں۔۔۔آپ کا تولیہ"
    " پلیز کھیلنے کے بعد مجھے میرے ڈبے میں واپس رکھ دیں۔۔۔فقط کھلونے"
    "دودھ کا ڈبا ھوں ۔۔فرج میں رہتا ھوں ۔۔باہر خراب ھوجاتا ھوں۔۔" فرج پر نوٹ

    مریم زیبا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 6
  2. صدف شاہد

    صدف شاہد -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2018
    پیغامات:
    308
    بہت مفید تجاویز ہیں
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. Ishauq

    Ishauq -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,613
    بالکل صحیح۔
    ایک مرتبہ جب تین سالہ بیٹے کو کھانا کھانے سے پہلے ہاتھ دھونے کا کہا تو اس نے کہا پاپا آپ نے دھوئے ہیں۔ اب کہتا ہوں آو بیٹا کھانا کھانے سے پہلے ہم ہاتھ دھو کر آتے ہیں :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  4. حافظ عبد الکریم

    حافظ عبد الکریم محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 12, 2016
    پیغامات:
    546
    بہت خوب
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  5. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,851
    السلام علیکم

    ہر ایک پر تبصرہ ہو سکتا ہے مگر ابھی ایک ہی کافی ہے

    میرا چھوٹا بیٹا عمر اب یاد نہیں شائد تین یا چار سال کا ہو گا، اس نے اپنی ناک میں ایک موٹا موتی پھنسا لیا جو ناک کے پچھلے حصہ کی طرف نکل گیا مگر نظر آ رہا تھا، خیر اہلیہ کا مجھے آفس میں فون آیا کہ میں اسے ہسپتال لے کر جا رہی ہوں آپ بھی وہاں پہنچ جاؤ، میں جب پہنچا تو بیٹا معصوم بن کے لیٹا ہوا ہے اور اہلیہ نے بتایا کہ ڈاکٹر نے بہت کوشش کی اسے نکالنے کی مگر موتی نہیں نکلا اب انہوں نے کسی بڑے ڈاکٹر کو فون کیا ہے اور آپریشن کی تیاری کرنے گئے ہیں، میں نے موتی دیکھا اور وہیں سرجیکل ٹولز پڑے تھے جس میں سے میں نے ایک ہاتھ میں چمٹی پکڑی اور بڑی اختیار سے موتی کو پکڑا اور دوسرے ہاتھ کی ایک انگلی اور انگوٹے سے چمٹی کی پکڑ کی تاکہ موتی پھسلے نہ اور ایک انگلی سے موتی کو پیچھے سے آہستہ آہستہ دبا کر موتی نکال لیا، ڈاکٹر صاحب اسے لے جانے کے لئے آئے تو اہلیہ نے بتایا کہ نکل گیا ہے، کیسے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سمائل!

    والسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  6. سیما آفتاب

    سیما آفتاب محسن

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    486
    وایاکم :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. سیما آفتاب

    سیما آفتاب محسن

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    486
    بہت عمدہ :)

    جزاک اللہ خیرا
     
  8. سیما آفتاب

    سیما آفتاب محسن

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    486
    وایاکم
     
  9. سیما آفتاب

    سیما آفتاب محسن

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    486
    وعلیکم السلام و رحمتہ اللہ وبرکاتہ

    خوب۔۔۔۔ ایسے حالات میں گھبراہٹ کام خراب کرسکتی ہے تحمل سے ہر کام ممکن ہے۔ شئیر کرنے کا شکریہ

    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
  10. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,397
    بہت عمدہ!

    جیسے ہمیں والدین کہ سمجھ نہیں آتی تھی کہ جب جاگنے کا دل کر رہا ہوتا تو امی سلا دیتیں اور جب سونے کا تو اٹھا دیتیں ایسے ہی اب ہمارے بچے بھی اس فلسفے کو سمجھ نہیں پاتے۔ اور جب سمجھ لیں گے تب تک خود بچوں والے ہو جائیں گے۔ اس لئے بچوں کے ساتھ بچہ بن کر انہیں سمجھایا جائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  11. سیما آفتاب

    سیما آفتاب محسن

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    486
    متفق۔۔ درست کہا آپ نے

    جزاک اللہ خیرا
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں