نفرت کے سفیر بول ٹی وی سے معافی کا مطالبہ کیجیے

عائشہ نے 'ذرائع ابلاغ' میں ‏مئی 29, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    حال ہی میں بول ٹی وی کی جانب سے رمضان کے مبارک مہینے میں مسلمانوں کے لیے دل آزار شو نشر کیے گئے۔ پیمرا کی جانب سے پروگرام کے مکار و بدتمیزمیزبان پر عارضی پابندی لگا دی گئی ہے جو یقینا کافی نہیں۔حال ہی میں اس مکار کا فیس بک پیج بھی معطل ہو گیا ہے۔
    کرنے کے کچھ کام یہ ہیں۔
    بول ٹی وی کے خلاف پرامن احتجاج جاری رکھا جائے یہاں تک کہ وہ معافی مانگے۔
    بول ٹی وی کے یوٹیوب اور سوشل میڈیا اکاؤنٹس سے دل آزار مواد رپورٹ کر کے کروایا جائے۔ جیساکہ یہ وڈیوزL
    Video links

    یوٹیوب وڈیو کے اپر رائٹ کارنر پر کلک کریں، پاپ اپ مینیو میں رپورٹ اور پھر ہیٹ فل کنٹنٹ کی کیٹگری منتخب کریں۔ یوٹیوب اکاؤنٹ ہولڈرز سائن ان ہو کر ایسا کر سکتے ہیں۔ گوگل اکاؤنٹ سے بھی یہ ممکن ہے۔
    سوشل میڈیا پر شیم آن بول ٹی وی کا ٹیگ تب تک استعمال کیا جائے جب تک یہ چینل معافی نہ مانگ لے۔
    اہل ایمان کے لیے اطمینان کا پہلو یہ ہے کہ مقابلہ مبینہ جھوٹوں سے ہے جو رمضان کے مقدس مہینے میں بدکلامی اور بدتمیزی سے اپنی ایمانی حالت خود ہی عیاں کر چکے ہیں۔ اس گرتی ہوئی دیوار کو دھکا بھی نہیں، صرف ایک پھونک چاہیے۔
    نفرت کے خلاف پرامن مزاحمت کے لیے مزید تجاویز کا انتظار رہے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 5
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    Change.org پر حسنین مسعود نے اس فتنہ باز اینکر پر تمام پاکستانی چینلز پر تاحیات پابندی کے مطالبے کی پٹیشن شروع کررکھی ہے۔ آج تک اس پٹیشن کی دوہزار پانچ سو افراد نے حمایت کر دی ہے جو پہلا ہدف تھا۔ اگلا سنگ میل پانچ ہزار سگنیچرز کا ہے۔ اگر آپ متفق ہیں تو اس کا ربط احباب سےشئیر کیجیے تا کہ اس مطالبے کو تقویت ملے اور پیمرا کو نوٹس لینا پڑے۔
    https://www.change.org/p/pemra-ban-...&utm_content=whatsapp_share_content_2:control
     
    Last edited: ‏مئی 29, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  3. بابر تنویر

    بابر تنویر -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,319
    توجہ دلانے کا شکریہ سسٹر۔
    لیکن میں ایک بات سوچ رہا تھا وہ یہ کہ اس وقت تک صرف 2500 لوگوں نے اس پیٹیشن کو سائن کیا ہے جو کے میرے خیال میں بہت کم تعداد ہے۔ شائد لوگ مسلکی تعصب کی وجہ سے ایسا نہیں کر رہے ہیں۔
     
    • متفق متفق x 1
  4. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    اس پٹیشن کے سپورٹرز کی تعداد تین ہزار ہو چکی ہے، ان شاءاللہ جتنا زیادہ اس کو پھیلائیں گے، اتنی زیادہ سپورٹ ملے گی۔
    میرے خیال میں ہر مسلک سے مثبت سوچ رکھنے والے افراد اس پابندی کے مطالبے میں شریک ییں۔ فرقہ واریت پھیلانے کا ڈرامہ بھونڈی اداکاری کی وجہ سے ناکام ہو چکا ہے۔ البتہ سب لوگوں کو متحد ہو کر ایک سمت میں مستقل مزاجی سے کام کرنے کی ضرورت ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • متفق متفق x 1
  5. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,636
    الحمدللہ تعداد 5000 سے زیادہ ہو چکی ہے۔ پٹیشن سائن کر کے فیس بک پر شئر ضرور کریں تا کہ زیادہ سے زیادہ لوگ سائین کریں ان شاءاللہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
  6. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    چھ ہزار سپورٹرز ہو گئے۔ میرے کانٹیکٹس میں سے جن لوگوں نے سائن کیا ان میں ہر مسلک کے لوگ ہیں۔ الحمدللہ تعلیم یافتہ اور باشعور لوگ اس جہالت کو پسند نہیں کرتے۔
    یوٹیوب نے اب تک ان ویڈیوز کو ری موو نہیں کیا، لیکن ڈس لائیکس کی تعداد اس ٹی وی پروڈیوسر کے لیے کافی ہے اگر اس میں ضمیر نام کی شے باقی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  7. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    اس چینل کی مکار انتظامیہ اب معافی اور صلح صفائی کی جانب چل پڑی ہے، سوال یہ ہے کہ اگر آپ سچے دل سے کسی کو توہین رسالت کا مرتکب سمجھتے ہیں تو کیا اس سے صلح ممکن ہے؟ اور اگر رمضان کے احترام میں صلح فرما لی ہے تو اس کا یہی مطلب ہوا کہ توہین رسالت کا الزام محض بکواس تھا جو لگایا بھی رمضان کے زمانے میں گیا۔ تو یہی ہے وہ احترام جو آپ کے دل میں شان رسالت کا ہے؟ کسی نے اس تھرڈ کلاس میڈیا کو سرکس کہا تو غلط نہیں کہا۔
    اس لولی لنگڑی صلح کے بعد معاملہ ختم نہیں ہوتا۔ اس چینل کو شان رسالت کے حساس مسئلے پر غیر ذمہ دارانہ نشریات اور مسلکی منافرت کو ہوا دینے پر معافی مانگنا ہو گی اور سنجیدہ افراد کو اس مطالبے پر قائم رہنا چاہیے۔ یہ معاملہ شخصیات کا ہر گز نہیں۔ بات اصول کی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    یہ ضرور کرنا چاہیے لیکن ساتھ میں یہ بھی ذہن میں رکھنا چاہیے کہ فرد واحد کے لیے اتنا کچھ کرنا ممکن نہیں ہوتا، اس کی پشت پناہی چینل کی انتظامیہ کر رہی ہے۔ مقبولیت حاصل کرنے کے لیے نفرت کو ہوا دینے کا کاروبار پاکستان میں عام ہے۔ برادری، رنگ، نسل، زبان کے نام پر کیا کچھ نہیں ہوتا رہا۔ پروگرام کے ڈائریکٹر کی ذہنیت بھی مسموم ہے۔ پیسے کی خاطر دین سے کھیلنے والوں کی جڑ اکھاڑنی چاہیے۔ اس اینکر جیسے لوگ تو وافر موجود ہیں۔ ایک جائے گا دوسرا آ جائے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں