مقلدین خصوصاً احناف سے سوالات

اھل حدیث نے 'نقطۂ نظر' میں ‏جنوری 18, 2009 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. الطحاوی

    الطحاوی -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 5, 2008
    پیغامات:
    1,825
    بطور مثال دوچار افراد کے نام جو اس کتاب کو پڑھ کر تقلید سے تائب ہوئے۔جب کہ ہم نے اپنے حلقہ میں بہت سارے غیرمقلدوں کو عدم تقلید پر نرم پڑتے دیکھاہے۔زیادہ دور جانے کی ضرورت نہیں اس کتاب سے میراتعارف پہلی مرتبہ اس وقت ہوا۔جب میں بغرض تعلیم حیدرآباد میں تھااورمولانا ریاض موسی ملیباری جوغیرمسلموں میں تبلیغ کاکام کرتے ہیں۔جن کامرکز ملک پیٹ میں‌ہے اورجوشاید حیدرآبادی بھائی کا محلہ اورعلاقہ بھی ہے۔کچھ غیرمقلدین وہاں بھی پائے جاتے ہیں۔میں نے اپنے علم میں کئی غیرمقلدین کو اس کتاب کوپڑھ کر تقلید کے بارے میں درست معلومات حاصل ہونے کااعتراف کرتاہواپایاہے۔
     
  2. ابومصعب

    ابومصعب -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 11, 2009
    پیغامات:
    4,067
    السلام علیکم
    ایسے عنوانات جس پر بحث کرکے صرف وقت کا ضیاع ہے، ہر دوفریقین اپنا قیمتی وقت ضائع کرتے ہیں۔
    قران و سنت کو اپنا رہنما بناکر، تقویٰ کی روش اختیار کریں، اپنی زندگی کا کچھ مقصد اور نصب العین بنائیں تب، ایکدوسرے کی ٹانگیں‌کھینچ کر، ایکدوسرے کا وقت ضائع کرنے کے بجائے۔۔۔لوگ اپنے ایک ایک لمحے کو اللہ کے دین کی اشاعت و سربلندی، اور اللہ کی رحمت کے حصول کی امید کے ساتھ، اعمال صالحہ کی جانب متوجہ رہیں تو خود کو بھی اور امت کو بھی جنت کے راستے کی جانب گامزن کرنے کے احسن کام پر قیمتی وقت صرف ہوسکتا ہے، ورنہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔!
    اللہ ہم سبکو ہدایت سے نوازے۔۔آمین
     
  3. ناصر نعمان

    ناصر نعمان -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 24, 2009
    پیغامات:
    38
    السلام علیکم ورحمتہ اللہ !

    اہلحدیث بھائی اسی حوالے سے ہم نے ایک موقعہ پر اسی فورم پرچند سوالات پوسٹ کئے تھے ۔۔۔۔ آپ سے جوابات کی درخواست ہے ۔۔۔۔
    ہم نے لکھا تھا ؛
    معاف کیجیے گا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔بھائی گلے میں تو آپ نے بھی پٹہ ڈالا ہوا ہے ۔۔۔۔ بس آپ کو نظر نہیں آتا۔۔۔۔ دعوے آپ لوگوں کے خواہ کیسے ہی کیوں نہ ہو ۔۔۔۔ لیکن عمل مقلدین سے کچھ ہٹ کرنہیں ۔۔۔۔۔ اس سے پہلے آپ جذبات میں آکر کچھ لکھنا شروع فرمائیں ۔۔۔۔ جواب دیجییے کہ
    کیا آپ کے نزدیک بھی معتبر بزرگوں میں فروعی مسائل پر فہم دلائل کی وجہ سے اختلاف رہا ہے ؟؟؟
    اور کیا آپ تسلیم کرتے ہیں کہ معتبر بزرگوں کے درمیان ایسے اختلافی فروعی مسائل جن میں‌ کوئی قائل ہو یا کوئی منکر ہو لیکن کیا آپ ایسے مسائل میں دونوں فریقین کو حق پر سمجھتے ہیں ؟؟؟
    جس طرح مقلدین مجتہدین سے اجتہاد میں خطاء کا احتمال ہوتا ہے
    اسی طرح آپ کے مجتہدین سے بھی اجتہاد میں خطاء کا احتمال ہوتا ہے
    اور آپ لوگوں کا خصوصی نعرہ تحقیق کا بھی ہے ۔۔۔۔ اور آپ لوگ اپنے قول کے مطابق نہ تو کسی کی اندھا دھند تقلید کرتے ہیں اور نہ کسی کے قول کو گلے میں‌ پٹہ کی طرح ڈال کے رکھتے ہیں
    تو پھر آپ سے سوال ہے کہ آپ لوگ کیسے ایک مخصوص رائے پر جمع نظر آتے ہیں ؟؟؟
    کیا آپ کے عالم کو اپنی تحقیق کے دوران کسی بھی معتبر بزرگ کا ایسا قول پسند نہیں آتا جو آپ کی جماعت کی مخصوص رائے کے خلاف ہو ؟؟؟
    اگر آتا ہے تو نظریں پیش فرمائیں کہ کن کن مسائل پر آپ کی جماعت میں علیحدہ علیحدہ رائے ہیں ؟؟؟(جس طرح معتبر بزرگوں میں بہت سے معاملات پر علیحدہ علیحدہ رائے رہی ہیں(
    پچھلے سو سالوں میں کتنے ایسے فتاوی جات ہیں جن پر آپ کے علماء نے پچھلے علماء کے قول کے خلاف فتوی دئیے ہیں ؟؟؟
    یا آپ سمجھتے ہیں کہ آپ کی جماعت کی طرف سے پیش کئے گئے فتوی جات کے مجموعے خطاء سے پاک ہیں ؟؟؟ اسی لئے صرف انہی مخصوص فتوی پر عمل کرتے ہیں جو آپ کے غیر مقلد علماءکرام کے مطابق ہیں؟؟؟؟
    کہیں ایسا تو نہیں کہ” تحقیق“ کا لفظ صرف نعرے کی حد تک محدود ہے ۔۔۔اور آپ حضرات بھی (مقلدین کی طرح )ایک مخصوص فقہ پر ہی عمل کرتے ہیں ؟(بس فرق صرف اتنا ہے کہ آپ حضرات نے اس فقہ کا کوئی نام نہیں رکھا۔۔۔اور مقلدین نے نام رکھا ہوا ہے ۔۔۔آپ حضرات” تحقیق “کہتے ہوئے بھی ایک مخصوص (بے نام )فقہ اور فتوی جات پر عمل کرتے ہیں جس سے کوئی اختلاف نہیں کرتے۔۔۔۔ اور مقلدین بے چارے کھلے الفاظ میں اپنے امام کی تقلید کا اعلان کرتے ہوئے اپنے امام سے کوئی اختلاف نہیں کرتے )
     
  4. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,867
    ناصر نعمان بھائی ۔ گویا ہم یہ مان لیں‌کہ اس تھریڈ کی پہلی پوسٹ میں کیے گئے سوالوں کے جواب آپ کے پاس نہیں‌۔
    ہاں ‌یا نہیں میں جواب دیں تاکہ آپ کے ان سوالوں کے جوابات دیے جا سکیں‌؟ دو ٹوک جواب چاہے ۔۔ لمبی لمبی پوسٹس پڑھنے کا وقت نہیں‌۔۔۔۔ ۔۔۔۔
     
  5. ناصر نعمان

    ناصر نعمان -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 24, 2009
    پیغامات:
    38
    اب رواحتہ بھائی جوابات موجود ہیں جیسا کہ شاہد نذیر بھائی نے نشاندہی فرمائی ۔۔۔۔۔ اور اسی طرح الطحاوی بھائی نے بھی "تقلید کی شرعی حیثیت" کتاب کی نشاندہی فرمائی ۔۔۔لیکن مسئلہ وہیں آجاتا ہے کہ تسلیم کرنے کے لئے دلوں میں گنجائش اور غیر جانبدار ہونا ضروری ہوتا ہے ۔۔۔۔۔۔ اس لئے ان سوالات کے جوابات پر بحث کا فائدہ نہیں ۔۔۔۔۔البتہ آپ ہمارے مذکورہ سوالات کے جوابات دینا چاہیں تو ہم منتظر رہیں‌گے ۔جزاک اللہ
     
  6. ابن داود

    ابن داود -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏اگست 9, 2010
    پیغامات:
    278
    السلام علیکم و رحمۃاللہ و برکاتہ!
    ناصر نعمان صاحب! ہم آپ کی مجبوری جانتے ہیں کہ مقلدین احناف ان تمام سوالات کے جواب دینے سے قاصر ہیں۔ رہی بات الطحاوی صاحب اور آپ جس کتاب "تقلید کی شرعی حثیت" کا تذکرہ کر رہے ہیں، اس کتاب کا بطلان بھی آپ کے سامنت پیش کر دیں گے۔ لیکن بات یہی ہے کہ اس سے قبل بھی دو کتابوں پر دو دو اعتراض ہی وارد کیئے تھے ، مگر طحاوی دوراں ان اعتراضات کا جواب دینے سے قاصر رہے۔ اگر آپ یہ ہمت کرتے ہو تو کہئے !! ہم مولانا مفتی تقی عثمانی کی کتاب "تقلید کی شرعی حثیت کی" حثیت پر سے گفتگو کر لیں!!
    اندھے کو ہمیشہ اندھیرا ہی نظر آتا ہے!!! معافی تلافی کی بات ہی نہیں، ہم آپ کے اس "عذر" سے واقف ہیں!!

    رہی بات آپ کے مندرجہ بالا سوالات کی، تو میاں جی ! ہم آپ سے اس پر گفتگو کرنے کے لیئے حاضر ہیں۔ مگر ایک بات بتلائیے! ہم آپ کو اس کا جواب تحریر کریں اور آپ اپنی جہالت کا رونا رونا شروع کر دیں کہ آپ تو جاہل ہو، انڈے چھولے بیچنے والے، یا نائی ہو تو پھر کیا ہو گا؟؟ اگر آپ میں جواب کو سمجھنے کی سکت ہے تو عرض کیجئے ہم جوابات پیش کیئے دیتے ہیں!!
    مگر آپ پھر اپنے جاہل ہونے کا رونا رونا نہ شروع کر دینا!! کہ آپ جاہل ہو، نائی ہو ، چھولے بیچنے والے ہو وغیرہ وغیرہ!!

    ما اہل حدیثیم دغا را نشناسیم
    صد شکر کہ در مذہب ما حیلہ و فن نیست
    ہم اہل حدیث ہیں، دھوکہ نہیں جانتے، صد شکر کہ ہمارے مذہب میں حیلہ اور فنکاری نہیں۔​
     
    Last edited by a moderator: ‏جنوری 4, 2011
  7. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,867
    آپ ایسا کریں کہ ان سوالات کو جو کہ پہلی پوسٹ پوچھے گئے ہیں ۔ ان کا جواب دینا آپ کے بس کی بات نہیں‌۔ لہذا ان کو پرنٹ‌کرکے اپنے اکابر علماء کے پاس لے جائیں ۔، اور جواب مل جائے تو یہاں‌ پیش کردیں‌۔ ‌۔۔۔۔۔ جب تک انتظار کر لیں گئے ۔۔

    آپ ذرا غیر جانبدار ہو کر اس تھریڈ کا مطالعہ کریں اور بتائیں کہ آپ کے سمجھ میں‌ کیا آیا ۔۔
    تقلید کا ایک منصفانہ جائزہ - URDU MAJLIS FORUM
    جہاں‌تک بات ہے '' تقلید کی شرعی حیثیت '' کی ، تقلید کا تعلق تو شریعت سے ہے ہی نہیں‌۔۔ پھر یہ لکھنا کہ تقلید کی شرعی حیثیت ۔۔ چہ معنی دارد ۔ اس کا اعتراف مصنف نے بھی کتاب کے ‌آخر میں‌ کیا ہے ۔ اس لیے یہ کتاب ہی سرے سے اس قابل نہیں کہ اس کا مطالعہ کیا جا سکے ۔
     
    Last edited by a moderator: ‏جنوری 4, 2011
  8. قاسم

    قاسم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 29, 2011
    پیغامات:
    875
    آپ نے بلکل سچی بات کی تقلید کے معنی ہیں قلادہ درکردن بستن گلے میں ہاریا پٹا
    الحمدللہ ہمیں یہ ہار مبارک
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں