بشیر بدر

s4shakeel نے 'کلامِ سُخن وَر' میں ‏اگست 11, 2007 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. s4shakeel

    s4shakeel -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    2,196
    کہیں چاند راہوں میں کھو گیا کہیں‌چاندنی بھی بھٹک گئی
    میں چراغ وہ بھی بجھا ہوا مری رات کیسے چمک گئی

    کبھی اجلا اجلا سا نام ہوں، کبھی کھویا کھویا کلام ہوں
    مجھے صبح کرنوں سے بھر گئی، مجھے شام پھولوں سے ڈھک گئی

    تجھے بھول جانے کی کوششیں کبھی کامیاب نہ ہو سکیں
    تری یاد شاخِ گلاب ہے جو ہوا چلی تو لچک گئ

    کبھی ہم ملے بھی تو کیا ملے وہی دوریاں وہی فاصلے
    نہ کبھی ہمارے قدم بڑھے نہ کبھی تمہاری جھجک گئی

    مری داستاں کا عروج تھا تری نرم پلکوں کی چھاؤں میں
    مرے ساتھ تھا تجھے جاگنا تری آنکھ کیسے جھپک گئی​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  2. اویس رانا

    اویس رانا -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 21, 2007
    پیغامات:
    656
    واہ جی واہ کیا بات ھے آپ کی۔

    شکریا۔
     
  3. naseerhaider

    naseerhaider -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2007
    پیغامات:
    408
    زمانہ کچھ نہیں بدلا،محبت اب بھی باقی ہے
    محبت زندگی کے باغ میں پھولوں کی ٹہنی ہے

    محبت کے ارادے معجزوں سے کم نہیں ہوتے
    سمندر پار کرنے کے لئے کاغذ کی کشتی ہے

    کبھی سو چا خُدا کے سامنے اک روز جانا ہے
    ترا مذہب غزل ہے اور غزل میں بت پرستی ہے

    کبھی بولو تو شہروں کے مکاں بھی بات کرتے ہیں
    تمہارے ذہن میں تو صرف قصبے کی حویلی ہے

    اگر بیٹی کی شادی ہو تو پھر کوئی نہیں دشمن
    مری بستی کی یہ مخلص کہاوت اب بھی سچی ہے

    ترے سورج نکلنے سے مراموسم نہیں بدلا
    وہی گہری اُداسی تھی،وہی گہری اُداسی ہے
    ڈاکٹر بشیر بدر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. s4shakeel

    s4shakeel -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    2,196
    بہت شکریہ بھائی۔۔۔۔۔
     
  5. s4shakeel

    s4shakeel -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    2,196
    بہت خوبصورت انتخاب ہوتا ہے آپ کا نصیر بھائی۔۔۔۔۔
     
  6. naseerhaider

    naseerhaider -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2007
    پیغامات:
    408
    بھائی آج کل آئی ٹی فرار حاصل کیا ہے انشاءللہ شئیرنگ کرتا رہوں گا.
     
  7. naseerhaider

    naseerhaider -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2007
    پیغامات:
    408
    مُسافر

    مُسافر کے رستے بدلتے رھے
    مُقدر میں چلنا تھا چلتے رھے

    سُنا ھے اُنہیں بھی ھوا لگ گئی
    ھواؤں کے رُخ جو بدلتے رھے

    مُحبت، عداوت ، وفا ، بے رُخی
    کرائے کے گھر تھے بدلتے رھے

    وہ کیا تھا جسے ھم نے ٹُھکرا دیا
    مگر عُمر بھر ھاتھ ملتے رھے

    کوئی پُھول سا ھاتھ کاندھے پہ تھا
    میرے پاؤں شعلوں میں جلتے رھے
     
  8. حیدرآبادی

    حیدرآبادی -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 14, 2007
    پیغامات:
    1,319
    موم کی زندگی گھُلا کرنا

    بھوپال میں ہمارے ایک عزیز دوست ہیں۔ ان کی ایک کزن ڈاکٹر راحت ، بشیر بدر صاحب کی اہلیہ ہیں۔
    لہذا ہمارے دوست ، بشیر بدر کا تازہ منتخب کلام گاہے بگاہے کبھی ای۔میل یا کبھی Sms سے بھیجتے رہتے ہیں۔ ایک مختصر بحر کی غزل ، جو ہمیں اکثر اوقات بہت اچھی لگتی ہے ۔۔۔ آپ جیسے سخن ور احباب کے سامنے پیش کرنے کی ہمت کر رہا ہوں، ملاحظہ فرمائیں :

    موم کی زندگی گھُلا کرنا
    کچھ کسی سے نہ تذکرہ کرنا

    میرا بچپن تھا آئینہ جیسا
    ہر کھلونہ کا منہ تکا کرنا

    چہرا چہرا میری کتابیں ہیں
    پڑھنے والو مجھے پڑھا کرنا

    یہ روایت بہت پرانی ہے
    نیند میں ریت پر چلا کرنا

    راستے میں کئی کھنڈر ہونگے
    شہ سوارو وہاں رکا کرنا

    جب بہت ہنس چکو تو چہرے کو
    آنسوؤں سے بھی دھو لیا کرنا

    پھول شاخوں کے ہوں کہ آنکھوں کے
    راستے راستے چُنا کرنا​
     
  9. s4shakeel

    s4shakeel -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    2,196
    ضرور جی ضرور۔۔۔۔۔۔:00001:
     
  10. s4shakeel

    s4shakeel -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    2,196
    حیدرآبادی بھائی بہت شکریہ ہمارے ساتھ شیئر کرنے کا۔۔۔۔۔
     
  11. naseerhaider

    naseerhaider -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2007
    پیغامات:
    408
    یہ غزل کِس کی ہے اس مطلعے کو پڑھ کر دیکھو
    چاند کی چودھویں تاریخ ہے ، اوپر دیکھو

    آج کمرے میں نہیں بیٹھنے والا موسم
    برف کھڑکی سے نہیں ‘گھر سے نکل کر دیکھو

    رات سوئی ہوئی رعنائیوں نے مجھ سے کہا
    ہم کو ہاتھوں سے نہیں‘ آنکھوں سے چُھو کر دیکھو

    چاند کی زلفیں ہیں، چہرہ ہے‘ قدوقامت ہے
    آسمانوں سے حویلی میں اُتر کر دیکھو

    ہم غریبوں سے کبھی ٹوٹ کے ملنے آؤ
    کیا بکھر نے میں مزاہے یہ بکھر کر دیکھو
    بتائے شکیل بھائی کس کی ہے؟
     
  12. ایم اے ساگر

    ایم اے ساگر -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 7, 2007
    پیغامات:
    9
    بہت زبر دست انتخاب ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
     
  13. محمد نعیم

    محمد نعیم -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 26, 2007
    پیغامات:
    901
    بشیر بدر ۔ ۔ ۔ ۔ نائس شیرنگ
     
  14. irum

    irum -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,578
    بہت خوب
     
  15. ام اقصمہ

    ام اقصمہ -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 7, 2007
    پیغامات:
    3,892
    [​IMG]

    کون آیا راستے آئینہ خانے ہو گئے
    رات روشن ہو گئی دن بھی سہانے ہو گئے

    کیوں حویلی کے اجڑنے کا مجھے افسوس ہو
    سینکڑوں بے گھر پرندوں‌کے ٹھکانے ہو گئے

    جاؤ ان کمروں کے آئینے اٹھا کر پھینک دو
    بے ادب یہ کہہ رہے ہیں‌ ہم پرانے ہو گئے ہیں

    یہ بھی ممکن ہے میں‌نے اس کو پہچانا نہ ہو
    اب اسے دیکھے ہوئے کتنے زمانے ہو گئے

    میری پلکوں‌پہ یہ آنسوں پیار کی توہین تھے
    اس کی آنکھوں سے گر ے موتی کے دانے ہو گئے


    [​IMG]
     
  16. ام اقصمہ

    ام اقصمہ -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 7, 2007
    پیغامات:
    3,892
    [​IMG]

    عظمتیں سب تیری خدائی کی
    حیثیت کیا میری اکائی کی

    میرے ہونٹوں کے پھول سوکھ گئے
    تم نے کیا مجھ سے بے وفائی کی

    سب میرے ہاتھ پاؤں لفظوں کے
    اور آنکھیں بھی روشنائی کی

    میں‌ہی ملزم ہوں‌میں‌ہی منصف ہوں
    کوئی صورت نہیں ‌رہائی کی

    اک برس اور زندگی کا بیت گیا
    تہہ جمی ایک اور کائی کی

    اب ترستے رہو غزل کے لیے
    تم نے لفظوں سے بے وفائی کی


    [​IMG]
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں