میری آخری نظم

دانیال ابیر نے 'حُسنِ کلام' میں ‏جولائی 27, 2009 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. دانیال ابیر

    دانیال ابیر محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 10, 2008
    پیغامات:
    8,415
    دفن کرو زندہ مجھے یارو !
    کہ میرے لمحے اندھیروں میں ہیں
    جلا دو مجھےیارو
    کہ اب ایماں فروش ہوں میں
    تھکن ہے بہت تھکن ہے یارو
    کہ ابدی بستر دو مجھے
    اندھیرا دو قبر کا، سکوں دو مجھے یارو
    کہ اب !
    جھیل میں کنول کا آخری پھول بھی کملا گیا ہے
    زندگی گدلا گئی ہے، روح بھی کثیف ہے
    بڑا وزن ہے اس دل پہ یارو
    مجھے دفن کرو
    زماں و مکاں گم ہیں خیال کے اندھیروں میں
    مراقبہ توڑو میرا مجھے دفن کرو یارو
    نیلی روشنیاں، سبز خیال
    سب پلندہ ہیں سرابوں کا
    رب دور ہے بہت دور ہے
    ریاضت کا حاصل کچھ بھی نہیں
    سیاہی ہی سیاہی ہے یارو
    مجھے دفن کرو
    کھو گیا گلاب، گلابی اندھیروں میں
    حسن چمکا، چٹخا، پھر ٹوٹا
    رسم ہوئی بہار یارو
    مجھے دفن کرو
    اور ہاں !
    سنو ذرا !
    زمیں کو ہو گر شکایت تو !
    اس ایماں فروش کو جلا دینا
    مگر مجھے فنا کردینا خدا کے لئے
    مجھے دفن کردینا یارو
     
  2. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,396

    اگر ضبطِ غم میں بکھرتے نہ ہم
    تو اوروں پہ کھلتا نہ اپنا بھرم
    اب ہم جو ٹُوٹے تو اس طور سے
    دیکھو ذرا ان کو تم غور سے
    کرچیاں آئینے سے بڑی ہو گئیں
    سازشیں پھر وہی کھڑی ہو گئیں
    دھیرے سے میں نے کہا تھا فقط
    زندگی نہ رہی تجھ سے اب الفت
    ہنسنے لگی یہ سن کر حیات
    مجھے پاؤ گے تم بعد از وفات
    بے وجہ تھک رہے ہو ادھر سے ادھر
    "مرکے بھی چین نہ پایا تو جاؤ گے کدھر"
     
  3. باذوق

    باذوق -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 10, 2007
    پیغامات:
    5,623
    ہو شامِ غم جس قدر بھی لمبی ، ڈھلے گی یہ بھی ضرور یارو
    کبھی تو اترے گا ترے گھر میں خوشی کی کرنوں کا نور یارو
     
  4. حیدرآبادی

    حیدرآبادی -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 14, 2007
    پیغامات:
    1,319
    یہ محلوں ، یہ تختوں ، یہ تاجوں کی دنیا
    یہ انساں کے دشمن سماجوں کی دنیا
    یہ دولت کے بھوکے رواجوں کی دنیا
    یہ دنیا اگر مل بھی جائے تو کیا ہے

    ہر اک جسم گھائل ، ہر اک روح پیاسی
    نگاہوں میں الجھن ، دلوں میں اداسی
    یہ دنیا ہے یا عالم بدحواسی
    یہ دنیا اگر مل بھی جائے تو کیا ہے

    جہاں اک کھلونا ہے انساں کی ہستی
    یہ بستی ہے مُردہ پرستوں کی بستی
    جہاں اور جیون سے ہے موت سستی
    یہ دنیا اگر مل بھی جائے تو کیا ہے

    جوانی بھٹکتی ہے ہے بیزار بن کر
    جواں جسم سجتے ہیں بازار بن کر
    جہاں پیار ہوتا ہے بیوپار بن کر
    یہ دنیا اگر مل بھی جائے تو کیا ہے

    یہ دنیا جہاں آدمی کچھ نہیں ہے
    وفا کچھ نہیں ، دوستی کچھ نہیں ہے
    جہاں پیار کی قدر ہی کچھ نہیں ہے
    یہ دنیا اگر مل بھی جائے تو کیا ہے

    جلا دو ، جلا دو ، اسے پھونک ڈالو یہ دنیا
    میرے سامنے سے ہٹا لو یہ دنیا
    تمہاری ہے تم ہی سنبھالو یہ دنیا
    یہ دنیا اگر مل بھی جائے تو کیا ہے

    :00002:
     
  5. طارق اقبال

    طارق اقبال محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 3, 2009
    پیغامات:
    316
    ماشاء اللہ بہت اچھا تھریڈ ہے
     
  6. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,492
    اور اتنا اچھا تھریڈ رک کیوں گیا؟؟؟
     
  7. بنت واحد

    بنت واحد محسن

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2008
    پیغامات:
    11,962
    ٹھکانہ قبر ہے عبادت کچھ تو کر غافل

    کہاوت ہےکہ خالی ھاتھ کسی کے گھرجایا نہیں کرتے
     
  8. سعد

    سعد -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏مئی 11, 2009
    پیغامات:
    129
    کیوں؟ آخری نظم کیوں؟ آپ کی لڑی سے مایوسی جھلک رہی ہے، جناب مایوسی گناہ ہے، اللہ سے رجوع کریں‌وہ بڑا ہی مہربان ہے نہایت رحم کرنے والا ہے اس سے مانگ کر تو دیکھیں وہ تو اپنے بندے کو خالی ہاتھ واپس لوٹانے سے بھی شرماتا ہے
     
  9. Asif

    Asif -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 4, 2007
    پیغامات:
    161
    اچھی نظم ہیں
     
  10. فرقان خان

    فرقان خان -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 4, 2010
    پیغامات:
    208
    زندگی جس کا بڑا نام سنا جاتا ہے
    اک کمزور سی ہچکی کے سوا کچھ بھی نہیں
     
  11. قاسم

    قاسم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 29, 2011
    پیغامات:
    875
    بہت اچھا بہت خوبصورت انتخاب ہے آپ کا۔
     
  12. این اے ناصر

    این اے ناصر -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 23, 2011
    پیغامات:
    808
    بہت خوب۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔بہت ہی اچھی پوسٹ ہے۔
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں